جیل میں قیدیوں کے مسائل پر سندھ اسمبلی میں بحث

جیل میں قیدیوں کے مسائل پر سندھ اسمبلی میں بحث

کراچی (24نیوز) سندھ اسمبلی میں آج جیل میں قیدیوں کے مسائل کی بات چھڑ گئی، متحدہ کے کامران اختر نے کہا رشوت لیکر قیدیوں کو عدالتوں میں پیش کیا جاتا ہے، وزیر قانون نے کارروائی کے لئے ثبوت مانگ لئے، منظور وسان بولے سردی آگئی ہے کچھ اور لوگ جیل جانے والے ہیں۔


تفصیلات کے مطابق سندھ میں جیل خانہ جات کے مسائل پر وفقہ سوالات میں اراکین نے سوالات کے انبار لگادیئے،ایم کیوایم کے کامران اختر نے کہا کہ جیلوں میں بند قیدیوں کو رشوت لے کر عدالتوں میں پیش کیا جاتاہے۔

وزیرِ قانون ضیا الحسن لنجار نے کہا کہ کسی سے پیسے لیکر عدالت لے جانے کا ثبوت ہے تو پیش کیاجائے تو تحقیقات کرائی جائے گی۔

خرم شیر زمان نے کہا کہ جیل جانے والے سیاسی قیدیوں کو کمر میں کیوں تکلیف ہوتی ہے، آغا سراج نے لقمہ دیا کہ آپ کبھی جیل نہیں گئے اس لئے آپ کو نہیں پتا۔

خوابوں کی دنیا میں رہنے والے منظور وسان نے کہا کہ جیل میں اب قیدیوں کو انڈا پراٹھہ ملتا ہے جس کو دیکھنا ہے جاکے دیکھ لے۔ وزیرِ قانون نے ایوان میں کہا کہ سندھ میں جیلوں کی کمی ہے، سندھ حکومت کو صوبے میں دس مزید جیلیں بنانے کے لئے خط لکھا ہے۔