وزیرقانون سے استعفیٰ صرف پارلیمنٹ ہی لے سکتی ہے: احسن اقبال

وزیرقانون سے استعفیٰ صرف پارلیمنٹ ہی لے سکتی ہے: احسن اقبال


 اسلام آباد(24نیوز):وزیرداخلہ احسن اقبال کا کہنا ہےکہ دھرنے والے لال مسجد اور ماڈل ٹاون جیسا واقعہ ڈھونڈ رہے ہیں، حکومت لوگوں کے جان و مال کے تحفظ کو یقینی بناتے ہوئے دھرنے کے خاتمے کیلیے کوشاں ہیں، وزیرقانون سے استعفیٰ سٹرک پر بیٹھے لوگ نہیں پارلیمنٹ لے سکتی ہے۔

اسلام آباد میں گفتگو کرتے ہوئے احسن اقبال نے کہا کہ دھرنے کے پیچھے جو مقصد ہے وہ ہمیں معلوم ہے، ختم نبوت کے نام پر منفی سیاست کی جارہی ہے اور دھرنے والے لوگوں کو ورغلا رہے ہیں لیکن ریاست ان لوگوں کے سامنے نہیں جھکے گی۔احسن کا مزید کہنا ہےکہ حکومت مذاکرات کے ساتھ ساتھ دیگر اقدامات بھی اٹھا رہی ہے۔احسن اقبال کا کہناتھا کہ محض ضد اور انا سے کوئی وزیر قانون سے استعفیٰ نہیں لے سکتا اور کنپٹی پر پستول رکھ کر کوئی شرط نہیں منوا سکتا۔ وزیرقانون سے استعفیٰ صرف پارلیمنٹ ہی لے سکتی ہے۔احسن اقبال کا کہنا تھا کہ اگر چاہیں تو آپریشن کرکے 3گھنٹوں میں علاقہ کلیئرکرالیں لیکن ہمیں یہ ضمانت کون دے گا کہ معاملہ نہیں بگڑے گا۔