چینی قونصل خانے پر حملہ کرنے والے دہشتگردوں کی شناخت ہوگئی ، ابتدائی تحقیقاتی رپورٹ وزیر اعلیٰ سندھ کو پیش

چینی قونصل خانے پر حملہ کرنے والے دہشتگردوں کی شناخت ہوگئی ، ابتدائی تحقیقاتی رپورٹ وزیر اعلیٰ سندھ کو پیش


کراچی( 24نیوز ) چینی قونصل خانے پر حملہ کرنیوالے دہشتگردوں کی شناخت ہوگئی،ابتدائی تحقیقات وزیر اعلیٰ سندھ کو پیش کردی گئیں۔

ابتدائی تحقیقات کے مطابق حملہ آوربلوچستان سے آئے،تینوں دہشتگردوں کا تعلق کالعدم تنظیم بلوچستان لبریشن آرمی ( بی ایل اے ) سے ہے،اس تنظیم نے بھی حملے کی ذمہ داری قبول کی ہے۔

مارے جانیوالے دہشتگردوں میں ایک سرکاری ملازم تھا،حملہ آور عبدالرزاق کا تعلق خاران سے تھا،یہ نچلے گریڈ کا ملازم تھا۔

ضرور پڑھیں:انکشاف15 جون 2016

خیال رہے بی ایل اے کو بھارتی خفیہ ایجنسی ” را “ مالی اور تکنیکی مددفراہم کرتی ہے،بلوچستان میں دہشتگرد کارروائیوں کے پیچھے بھی اسی تنظیم کا ہاتھ ہے۔

دوسری جانب وزیر اعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ کی زیر صدارت اجلا ہوا جس میں مشیر قانون مرتضی وہاب، چیف سیکریٹری ، سیکریٹری داخلہ، آئی جی سندھ اور قانون نافذ کرنے والے اداروں کے افسران نے شرکت کی، اجلاس میں چینی قونصل خانے پر حملے اور امن امان کی صورتحال پر غور کیا گیا،سندھ حکومت نے کراچی میں رینجرز اور پولیس کا ٹارگٹڈ آپریشن تیز کرنے کا فیصلہ کرلیا ہے،وزیر اعلیٰ کا اس موقع پر کہنا تھا کہ شہید پولیس اہلکاروں اور سکیورٹی گارڈ کے اہلخانہ کا حکومت خاص خیال رکھے گی ۔

اجلاس میں آپریشن کو لیڈ کرنیوالی خاتون پولیس افسر سوہائے عزیز تالپور کے کردار کو سراہا گیا،جنہوں نے کمال ہمت اور مہارت کا مظاہرہ کرتے ہوئے دہشتگردوں کے ناپاک عزائم کو ناکام بنایا۔

یاد رہے چینی قونصل خانے پر حملے کی کوشش ناکام بنادی گئی ،پولیس اور رینجرز کی کارروائی میں تین دہشتگرد مارے گئے،دو پولیس اہلکار اور ایک سکیورٹی گار ڈ شہید ہوگئے ہیں۔

اظہر تھراج

Senior Content Writer