کرپشن کے خاتمے کیلئے چین سے مدد لینگے:عمران خان


ریاض: وزیر اعظم عمران خان عالمی سرمایہ کاری کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا ہے کہ ہم نے ملک کو فلاحی ریاست بنانے کا آئیڈیا مدینہ منورہ سے لیا،50لاکھ گھر بنانے میں تمام رکاوٹیں دور کرینگے،دوست ممالک اور آئی ایم ایف سے بات کررہے ہیں،مشکل حالات سے نکلنے میں کچھ وقت لگے گا۔

انہوں نے کہا ہے کہ ہمیں ماضی کی حکومت سے دو بڑے خسارے ملے ہیں،کرپشن کے خاتمے کیلئے چین سے مدد لینگے،سی پیک پاکستان کیلئے بڑے مواقع پیدا کرے گا،کوشش ہے کہ کاروبار کے مواقع پیدا کئے جائیں،آنیوالے تین سے چھ ماہ پاکستان کیلئے سخت ہیں۔

انہوں نے کہا ہے کہ منی لانڈرنگ کے خاتمے کیلئے اقدامات کررہے ہیں،ہمیں حکومت میں آئے ساٹھ دن ہوئے ہیں،سمندر پار پاکستانی ملک کیلئے طاقت ہیں،آئی ٹی سیکٹر پر توجہ دے رہے ہیں،ہم نے ملک میں جو بھی اصلاحات کی ہیں ان کا اثر آنیوالے دنوں میں نظر آئے گا۔

انہوں نے کہا کہ پاکستان میں دہشتگردی افغانستان سے ہورہی ہے،دہشتگرد اب بھی افغانستان سے آرہے ہیں،ہم نے روکنے کیلئے اقدامات کیے ہیں اور کررہے ہیں۔

وزیراعظم عمران خان دو روزہ دورے پر گزشتہ روز سعودی عرب کے شہر مدینہ منورہ پہنچے تھے، جہاں مدینہ کے گورنر شہزادہ فیصل بن سلمان اور سعودی سفیر نے ان کا استقبال کیا تھا۔وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی، وزیر خزانہ اسد عمر، وزیر اطلاعات فواد چوہدری اور وزیراعظم کے مشیر برائے تجارت عبدالرزاق داؤد بھی وزیراعظم کے ہمراہ ہیں۔

واضح رہے کہ سعودی عرب میں منعقدہ اس سرمایہ کاری کانفرنس میں 90 ممالک سے 3 ہزار 800 مندوب شرکت کر رہے ہیں۔اپنے دورے کے دوران وزیراعظم عمران خان شاہ سلمان بن عبدالعزیز اور ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان سے بھی ملاقاتیں کریں گے۔گزشتہ روز سعودی عرب روانگی سے قبل برطانوی نشریاتی ادارے کو اپنے انٹرویو میں وزیراعظم عمران خان نے کہا تھا کہ پاکستانی معیشت کی بہتری کے لیے وہ سعودی عرب سے قرض لینے کے خواہش مند ہیں۔انہوں نے سعودی عرب ایران تنازع ختم کرانے کے لیے کردار ادا کرنےکی پیشکش بھی کی تھی۔