شریف خاندان کی سزا معطلی کیخلاف اپیل،سپریم کورٹ بنچ تشکیل


اسلام آباد(24نیوز)سپریم کورٹ نے شریف خاندان کی سزا معطلی کے فیصلے کے خلاف نیب کی اپیلیں سماعت کے لئے منظورکرلیں، چیف جسٹس پاکستان کی سربراہی میں خصوصی بنچ کل سماعت کرےگا۔

سپریم کورٹ میں ایون فیلڈ ریفرنس میں شریف خاندان کی سزا معطلی کے اسلام آباد ہائی کورٹ کے فیصلے کے خلاف نیب کی اپیل سماعت کے لئے مقرر کر لی گئی،چیف جسٹس نے بنچ تشکیل دے دیا،خصوصی بنچ کل سماعت کرے گا ۔

انیس ستمبر کو اسلام آباد ہائی کورٹ نے ایون فیلڈ ریفرنس میں احتساب عدالت سے سزا پانے والے نواز شریف، مریم نواز اور کیپٹن ریٹائرڈ صفدر کی سزامعطل کر دی تھی، جس کے بعد انہیں اڈیالہ جیل سے رہا کر دیا گیا تھا،نیب نے اپیل میں موقف اپنایا کہ ہائی کورٹ نے ایون فیلڈ ریفرنس مقدمہ کے شواہد اور حقائق کا درست جائزہ نہیں لیا۔۔عدالت عظمیٰ فیصلے کو کالعدم قرار دے۔

دوسری جانب سابق وزیراعظم نوازشریف نے احتساب عدالت میں پیشی کے موقع پر صحافیوں کے سوالات کا کوئی جواب نہیں دیا اور تمام جواب مریم اورنگزیب کو دینے کی ہدایت کی،نوازشریف نے صحافیوں کے سوالات کے جواب دینے سے گریز کیا اور ہر سوال کے جواب کی ذمہ داری پارٹی ترجمان مریم اورنگزیب پر ڈال دی۔

صحافی نے نوازشریف سے سوال کیاکہ موجودہ سیاسی منظر نامے اور ملاقاتوں کو کیسے دیکھ رہے ہیں؟اس پر میاں نوازشریف نے کہا کہ سوال کا جواب مریم اورنگزیب دیں گی،پارٹی قائد کے اشارے پر مریم اورنگزیب نے جواب دیا کہ حکومت کی نااہلی برقرار رہی تو سیاسی منظر نامہ تبدیل ہوگا۔

ایک اور صحافی کے سوال پر کہ آصف زرداری آپ سے ملاقات کیلئے تیار ہیں کیا آپ بھی ملیں گے؟سابق وزیراعظم نے ایک بار پھر پارٹی ترجمان کو جواب دینے کا کہا جس پر مریم اورنگزیب نے کہا کہ آصف زرداری کے بیان کا پارٹی سطح پرجائزہ لے رہے ہیں۔