کراچی: سگی بہن کے قتل میں ملوث علوینہ کو رہائی مل گئی


کراچی (24نیوز) ملیر سعود آباد میں سگی بہن کے قتل ملوث ملزمہ علوینہ کی مقامی عدالت نے ضمانت کی درخواست منظور کرلی، جس کے بعد علوینہ کو سینٹرل جیل کراچی سے رہا کردیاگیا۔ علوینہ نے ٹوئنٹی فور نیوز کو بتایا کہ پولیس نے جبراً اقبالی بیان لیا۔

کراچی میں موبائل فون پر دوستی کی خون آشام داستان، سعود آباد میں چار ماہ قبل منگیتر سے مل کر بہن کو مبینہ ذبح کردینے والی لڑکی علوینہ کو مقامی عدالت سے ضمانت پر رہائی مل گئی۔ عدالت میں علینہ قتل کیس کی پیروی کرنے والے ایڈووکیٹ لیاقت علی نے کہا  کہ علوینہ کو ان کے والد نے معاف کیا جس پر رہائی ملی۔

یہ بھی پڑھیں: پاکستان نژاد اطالوی لڑکی گجرات میں غیرت کی بھینٹ چڑھ گئی 

دوسری جانب ملزمہ علوینہ اور مقتولہ علینہ کے والد ندیم احمد الزام عائد کرتے ہیں کہ پولیس نے واقعہ کے مرکزی کردار دو بھائیوں احسن اور عباس کا ساتھ دیتے ہوئے تفتیش میں بددیانتی کی۔ انہوں نے نہ صرف بہن کے قتل کا برملا اعتراف کرنے والی علوینہ کو بلکہ شریک جرم علوینہ کے منگیتر مظہر کو بھی بے قصور قرار دیا ۔


قتل کیس کے مدعی ندیم احمد نے کہا  کہ پولیس نے ان امور پر بھی تفتیش نہیں کی جن کی نشاندہی خود ملزم احسن نے کی تھی،جبکہ علوینہ خود بھی بیان تبدیل کرتے ہوئے کہتی ہے کہ اس روز گھر میں ڈاکو آئے تھے جنہوں نے علینہ کو قتل کیا۔

پڑھنا مت بھولیں: کینیڈامیں وین ڈرائیور نے راہگیروں کو کچل ڈالا

معاملہ ایک بہن کا دوسری کو بلیک میل کرنے کا تھا یا علینہ کا قتل ڈکیتی کے دوران مزاحمت کا شاخسانہ تھا۔واقہے کو چار ماہ گزر گئے ۔گرفتار چار ملزموں میں سے تین ضمانت پر رہا بھی ہوگئے اور یہ سوال اب بھی جواب طلب ہے کہ علینہ کو کیوں، کس نے اور کس لئے قتل کیا گیا ۔