ٹکراؤ کی پالیسی جمہوریت اور ملک کے مفاد میں نہیں:بلاول


سکھر(24نیوز)پیپلزپارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری کا کہنا ہے کہ ٹکراؤ کی پالیسی جمہوریت اور ملک کے مفاد میں نہیں ۔
تفصیلات کے مطابق سکھر میں ہسپتال کی افتتاحی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے بلاول بھٹو زرداری نے کہا کہ ہرجان قیمتی ہے، ایک انسان کو بچانا انسانیت بچانے کے مترادف ہے، پانچ سال سیاسی جماعت ایک شہر کو ترجیح دیتی رہی لیکن پیپلزپارٹی نے عوام کی فلاح و بہبود پر توجہ دی،اسکول،کالج بنائے، یونیورستی بنائے، 6 بڑے ہسپتال بنائے۔
اس موقع پر انہوں نے سابق وزیراعظم نوازشریف پر تنقید کرتے ہوئے کہا کہ میاں صاحب نے مخالفین کیخلاف فیصلوں پربغلیں بجائیں، آپ نے سزاؤں کے لیے ججوں پر دباؤ ڈالا، میاں صاحب آپ نیایک آمر کو معافی نامہ لکھ کردیا، آپ کو عمر قید کی سزاسنائی گئی،آپ نیاپیل تک نہیں کی، آٹھ سال بعد واپس آئے تو ساری سزائیں معاف کردی گئیں۔
چیئرمین پی پی کا کہنا تھا کہ ٹکراؤ کی پالیسی جمہوریت اور ملک کے مفاد میں نہیں ، ملک میں اصل مسائل پر بات نہیں ہورہی، پانامہ اور اقامہ کی عوام کو پرواہ نہیں ، آپ کو کیوں نکالا اس سیعوام کوغرض نہیں ، یہ عوام کے مسائل نہیں ، عوام کے مسائل پر کام نہیں ہورہا، مہنگائی کہاں تک پہنچ گئی؟صحت اور تعلیم کی صورتحال کیاہے۔
بلاول بھٹو زداری نے کہا کہ مرکز،کشمیر اور پنجاب میں ان کی حکومت ہے مگررونا ختم نہیں ہوتا، جو کام ان کو کرنا ہے وہ نہیں کرتے، جو نہیں کرنا وہ کررہے ہیں، ملک کے اثاثے اونے پونے داموں بیچے جارہے ہیں، ذاتی ایئرلائن چلارہے ہیں اور قومی ایئرلائن فروخت کررہے ہیں، حالات جیسے بھی ہوں، اپنی ماں کا زیور نہیں بیچاجاتا۔