وفاقی وزیر داخلہ احسن اقبال بھی جوتا کلب کے ممبر بن گئے


نارووال (24 نیوز) سابق وزیر اعلیٰ سندھ ارباب غلام رحیم، شیخ رشید کے بعد احسن اقبال بھی جوتا کلب کے ممبر بن گئے۔ امریکا اور بھارت سمیت کئی ممالک میں بھی دل جلوں کی طرف سے جوتے پھینکنے کے واقعات سامنے آتے رہتے ہیں۔

نارووال میں مسلم لیگ (ن) کے ورکرز کنونشن سے خطاب کرنے وفاقی وزیر داخلہ احسن اقبال اسٹیج پر پہنچے تو بلال حارث نامی ایک شخص نے ان کی طرف جوتا پھینک دیا۔ خوش قسمتی سے احسن اقبال کو جوتا نہیں لگا۔ واقعے کے بعد وہ تقریر ادھوری چھوڑ کر چلے گئے۔ پولیس نے جوتا پھینکنے والے شخص کو حراست میں لے لیا۔

اس سے قبل دو ہزار سترہ میں پاکستان سپر لیگ کا فائنل میچ دیکھنے کے لئے عوامی مسلم لیگ کے سربراہ شیخ رشید جب ٹرین کے ذریعے لاہور ریلوے سٹیشن پہنچے تو فقیر محمد نامی بزرگ شہری کو پتہ نہیں کیا سوجھی کہ اپنا جوتا ان پر اچھال دیا۔

دو ہزار اٹھ میں سندھ اسمبلی میں جب سابق وزیر اعلیٰ سندھ ارباب غلام رحیم داخل ہورہے تھے تو آغا جاوید پٹھان نامی شخص نے جوتا دے مارا۔

چوبیس ستمبر دو ہزار سات میں ایک شخص نے احمد رضا قصوری کے منہ پر سپرے کر کے ان کا منہ کالا کردیا تھا۔

۔پاکستان میں سیاسی رہنماوں پر جوتا مارنے کی روایت پرانی ہے۔۔اس لئے احسن اقبال کو برا منانے کی ضرورت نہیں۔