ا کاﺅنٹس نہ کھلے تو بچے سڑک پر آجائینگے:اسحاق ڈار


اسلام آباد(24نیوز) ہجویری ٹرسٹ کے اکاﺅنٹس بحال ہونگے یا نہیں؟احتساب عدالت فیصلہ 31جنوری کو سنائے گی،ڈپٹی پراسیکیوٹر نیب کے دلائل،ادارہ اچھے مقصد کےلئے بنا لیکن استعمال غلط کیا جارہا ہے۔

تفصیلات کے مطابق اسحاق ڈار کی جانب سے ہجویری ٹرسٹ کے اکاﺅنٹس بحال کرنے کی درخواست کی سماعت احتساب عدالت کے جج محمد بشیر نے کی۔نیب نے ہجویری ٹرسٹ کے اکاﺅنٹس اور اسحاق ڈار کی جائیداد منجمد کرنے سے متعلق جواب جمع کرا دیا۔ اسحاق ڈار کے وکیل قاضی مصباح نے جواب پڑھنے کےلئے مہلت کی استدعا کرتے ہوئے دلائل دیئے کہ ہجویری ٹرسٹ یتیموں کا ادارہ ہے۔کیا آپ چاہتے ہیں ہم یتیم بچیوں کی شادیاں اور تعلیم روک دیں۔جبکہ     ڈپٹی پراسیکیوٹر نیب کاکہنا تھا کہ یہ حقیقت ہے کہ ہجویری ٹرسٹ میں یتیم بچے ہیں لیکن ٹرسٹ کا پیسہ کوئی غلط استعمال کیسے کرسکتا ہے؟آڈٹس رپورٹ دیکھ کر بچوں کی کفالت کا ماہانہ خرچ طے کیا جائے۔نیک نیتی سے چاہتے ہیں کہ مسئلہ حل ہو۔      

فاضل جج نے واضح کیا کہ کبھی کم پیسے لگتے ہیں کبھی زیادہ،عدالت کوئی قدغن نہیں لگاسکتی۔دیکھنا ہو گا کیا طریقہ کار طے کیا جائے۔عدالت نے دلائل سننے کے بعد فیصلہ محفوظ کرلیا جو 31جنوری کو سنایا جائیگا۔