راؤانوار کو دبئی فرار کروانے میں سندھ پولیس کی معاونت،67مرتبہ دبئی گئے


اسلام آباد(24نیوز) سابق ایس ایس پی ملیرراؤ انوار کو بیرون ملک فرار کروانے میں سندھ پولیس نے معاونت کی،ایف آئی اے اہلکاروں تیمور قمر اور شبانہ صدیقی نے بیرون ملک فرار کی کوشش ناکام بنائی،67مرتبہ دبئی گئے۔
تفصیلا ت کے مطابق سابق ایس ایس پی ملیر کراچی راؤ انوار کو بیرون ملک فرار کروانے میں سندھ پولیس نے معاونت کی تھی جس کی تصاویر منظر عام پر آگئی ہیں،کئی مرتبہ دبئی گئے،67مرتبہ دبئی گئے اور سیر سپاٹے کرتے رہے،یہ تمام دورے کراچی سے کیے گئے،راؤ انوارنے پہلی مرتبہ انٹرنیشنل دورے کیلئے اسلام آباد ائرپورٹ کا استعمال کیا تھا، جہاں ایف آئی اے کے اہلکار تیمور قمر اور انسپکٹر شبانہ نے بیرون ملک فرار کی کوشش ناکام بنادی،شبانہ نے ائیر لائن سے آف لوڈ کروادیا اور اس کی رپورٹ بھی اعلیٰ حکام کو کردی،ان کو محکمانہ این او سی نہ ہونے کی وجہ سے اتارا گیا۔انہوں نے پولیس فورس میں ہونے کے باوجود دبئی کا اقامہ حاصل کیا۔
یاد رہے راو انوار کے خلاف مقدمہ مقتول نقیب کے والد محمدخان کی مدعیت میں سچل تھانے میں درج کیا گیا ہے اور اس مقدمے میں سابق ایس ایس پی سمیت ان کی ٹیم کے اہلکارنامزدہیں۔ایف آئی آرکے متن میں محمد خان کی جانب سے موقف اختیار کیاگیا ہے کہ میرے بیٹے نقیب کو پولیس کی جانب سے ابوالحسن اصفحانی روڈسے اغواکیاگیااور مقتول کے ساتھ 2اورنوجوانوں کوبھی اغواکیاگیاتھا۔ جبکہ مقدمے میں اغوا،قتل اورانسداددہشت گردی کی دفعات شامل کی گئی ہیں اور واضح رہے کہ مقدمے کی تفتیش ایس ایس پی عابدقائم خانی کریں گے۔
واضح رہے کہ 13 جنوری کو شاہ لطیف ٹاؤن میں مشکوک مقابلے کے دوران راؤ انوار نے نقیب اللہ کو کالعدم تنظیم کا دہشت گرد قرار دے کر اس کی پولیس مقابلے میں ہلاکت کی اطلاع دی تھی۔
واقعے پر شدید احتجاج کے بعد سندھ حکومت نے تحقیقاتی کمیٹی بنائی جس نے مقابلے کو جعلی قرار دیا جب کہ چیف جسٹس پاکستان نے بھی جعلی مقابلے کا از خود نوٹس لے رکھا ہے۔

ویڈیو دیکھیں