زینب کا قاتل کیسے شکنجے میں آیا؟


قصور(24نیوز)دوہفتوں تک تفتیشی اداروں اورحکام کو چکرانے والا زینب کا شاطرقاتل عمران کیسے قانون کے شکنجے میں آیا؟؟؟ٹوئنٹی فورنیوز نے سنسنی خیز پردہ چاک کردیا ہے، ٹوئنٹی فورنیوز کی تحقیقاتی رپورٹنگ نے سارا معاملہ کھول کررکھ دیا۔
تفصیلات کے مطابق جے آئی ٹی میں شامل ایس ایچ اومیلسی نے اہم راز بتادیئے،مرزا حسنین کاکہنا ہے کہ ملزم کی حتمی شناخت ڈی این اے سے ہوئی، گرفتاری میں مدد ملزم کی جیکٹ اورجوتوں ملی،ایس ایچ اومرزا حسین کا کہنا تھاکہ ملزم اپنا حلیہ تبدیل کرتا رہا،۔ڈی این اے نمونے کے لیے بھی ٹال متول کرتا رہا،ملزم فرار نہیں ہوا، گھر میں چھپا ہوا تھا۔
مرزا حسین نے بتایا کہ ملزم کی گرفتاری میں اسکی والدہ نے کوئی مدد نہیں کی،معلوم ہونے کے باوجود بیٹے کا جرم چھپاتی رہی،تمام لوگوں کوگرفتارکرنا ممکن نہیں تھا اس لئیلوگوں کا ڈی این اے کرایا گیا۔
خیال رہے کہ وزیراعلیٰ پنجاب شہباز شریف نے قصور میں زیادتی کے بعد قتل ہونے والی 7 سالہ بچی زینب انصاری کے والد کے ہمراہ پریس کانفرنس کرتے ہوئے اس کے قاتل کی گرفتاری کا اعلان کیا تھا۔
شہباز شریف کا کہنا تھا کہ ملزم محمد عمران کو ڈی این اے ٹیسٹ کے ذریعے 100 فیصد تصدیق کے بعد گرفتار کیا گیا اور پھر تصدیق کے لیے پولی گرافک ٹیسٹ بھی لیا گیا۔

ویڈیو دیکھیں