حکومتی اور اپوزیشن ارکان نے سینیٹ اجلاس کو اہمیت دینا کم کر دی

حکومتی اور اپوزیشن ارکان نے سینیٹ اجلاس کو اہمیت دینا کم کر دی


اسلام آباد(24 نیوز): حکومتی اور اپوزیشن ارکان نے سینیٹ اجلاس کو اہمیت دینا کم کر دی، حلقہ بندیوں سے متعلق آئینی ترمیم کی منظوری کا معاملہ آج ایجنڈے میں شامل ہی نہیں کیا گیا۔

تفصیلات کے مطابق سینیٹ اجلاس چیئرمین رضا ربانی کی زیر صدارت ہوا۔ ایجنڈے میں حلقہ بندیوں سے متعلق آئینی ترمیم کی منظوری کا معاملہ ہی شامل نہیں کیا گیا۔ آئینی ترمیم منظور کروانے کے لئے 69 ارکان درکار ہوتے ہیں. گزشتہ جمعہ، پیر، بدھ اور آج پھر ارکان کی مطلوبہ تعداد میسر نہ ہوسکی۔

اجلاس میں الیکٹرانک جرائم 2016 سے متعلق ایف آئی اے کی سرگرمیوں کی ششماہی رپورٹ وزیر پارلیمانی امور آفتاب شیخ نے پیش کی جسے متعلقہ کمیٹی کوبھجوا دیا گیا، چئیرمین سینیٹ نے حیات آباد میں خود کش حملے کی مذمت کرتے ہوئے کہا کہ بزدلانہ حملے قوم کے حوصلے پست نہیں کرسکتے۔ انسداد الیکٹرانک جرائم کی رپورٹ ایف آئی اے کو ایوان میں پیش کرنے کی ہدایت کر دی،اجلاس پیر کی شام 4 بجے تک ملتوی کر دیا گیا۔

آئینی ترمیمی بل کی منظوری کے معاملے پر فرحت اللہ بابر کا کہنا تھا کہ سیاسی جماعتیں کشکمش میں مبتلا ہیں۔