عقیدہ ختم نبوت کو نصاب کا حصہ بنانے کیلئے متفقہ قرارداد منظور


لاہور (24 نیوز): پنجاب اسمبلی میں عقیدہ ختم نبوت کو نصاب کا حصہ بنانے کے لئے قرارداد متفقہ طور پر منظور کرلی گئی ہے، جمعہ کو بلیک فرائیڈے کے نام سے منسوب کرنے پر حکومت اور اپوزیشن ایک ہو گئی۔

تفصیلات کے مطابق پنجاب اسمبلی کے اجلاس میں حکومتی رکن اسمبلی وحید گل کی جانب سے عقیدہ ختم نبوت کو نصاب تعلیم کا حصہ بنانے کے لئے قرارداد پیش کی، قرارداد کے متن میں کہا گیا کہ عقیدہ ختم نبوت کا دفاع ایمان کا حصہ ہے، آئین پاکستان نے اس عقیدے کو مکمل تحفظ دیا ہے۔

قرارداد میں مزید کہا گیا کہ نوجوان نسل اور طلبا و طالبات کے لئے عقیدہ ختم نبوت کا مضمون نصاب کا حصہ لازمی قرار دینا چاہیے، وفاقی اور صوبائی حکومت اس حوالے سے فوری اقدامات کریں، قرارداد کو متفقہ طور پر منظور کر لیا۔

پنجاب اسمبلی میں بلیک فرائیڈے منانے کے حوالے سے اپوزیشن نے شدید احتجاج کیا، اپوزیشن لیڈر نے احتجاج کرتے ہوئے بلیک فرائیڈے منانے والوں کے خلاف کارروائی کا مطالبہ کرتے ہوئے اجلاس کا بائیکاٹ کر دیا۔

بلیک فرائیڈے کے خلاف حکومتی بنچوں سے بھی آواز بلند کی گئی، صوبائی وزیر ایکسائز اینڈ ٹیکسیشن مجتبی شجاع الرحمن کا کہنا تھا کہ جمعہ کے دن کو بلیک فرائیڈے منانے پر ہمیں بھی اعتراض ہے، اس پر اپوزیشن کے ساتھ مل کر متفقہ قرارداد لائیں گے۔