دو بسوں کی تیز رفتار ریس نے معصوم بچی کی زندگی کا چراغ بجھا دیا


  کراچی (24نیوز): کراچی میں تیز رفتار بس نے ایک اور ننھی کلی کی جان لے لی، سکینہ کوروندنے والے ڈرائیوراور بس مالک کو گرفتار کرلیا گیا۔ معاملے کی سی سی ٹی وی فوٹیج بھی منظرِعام پرآگئی۔ کراچی کی ایم اے جناح روڈ پر، ریس لگانے کے جنون نے معصوم بچی کی زندگی کا چراغ بجھا دیا۔

افسوس ناک حادثے کی سی سی ٹی وی فوٹیج میں دو بسیں ریس لگاتی دکھائی دے رہے ہیں،اچانک ایک بس نے خطرناک حد تک اسپیڈ بڑھائی، سڑک کے ایک طرف موٹر سائیکل پر ایک باپ اپنی چار سالہ سکینہ کو اسکول چھوڑنے جا رہا تھا، فوٹیج میں دل دہلا دینے والے مناظر قید ہوئے کہ بس نے موٹر سائیکل کو ٹک مارنے کے بعد بچی کو بھی کچل ڈالا، ممکنہ طور پر سنگ دل ڈرائیور قریب سے فرار ہوتا دکھائی دیا۔حادثے کے بعد مشتعل افراد نے دونوں بسوں کو آگ لگا دی،اور شدید احتجاج کیا۔

جاں بحق بچی کے اہلخانہ نے بسوں کے روٹس لائسنس منسوخ کرنے کا مطالبہ کردیا۔موقع سے بسیں جلانے کے الزام میں 11 افراد کو حراست میں لے لیا گیا، ادھر معاملے میں ملوث بس کے ڈرائیور اور مالک سلیم کو سچل سے پولیس نے گرفتار کرلیا،جبکہ ننھی سی سکینہ کو مقامی قبرستان میں سپردخاک کردیا گیا، دوسری جانب ماڑی پور روڈ پر ٹریفک حادثے میں 12 سالہ بچہ کی ہلاکت میں ملوث ڈرائیور کو بھی گرفتار کرکے تفتیش شروع کردی گئی ہے۔