لاہور کی گورنمنٹ کالج یونیورسٹی بدترین مالی بحران کا شکار ہو گئی

لاہور کی گورنمنٹ کالج یونیورسٹی بدترین مالی بحران کا شکار ہو گئی


  لاہور (24نیوز): لاہور کی 150 سالہ قدیم درسگاہ گورنمنٹ کالج یونیورسٹی بدترین مالی بحران کا شکار، حکومت نے چھ سالوں میں گرانٹ 125 ملین روپے سے کم کر کے 8 ملین روپے کر دی۔

ذرائع نے بتایا ہے کہ یونیورسٹی کا مالی بحران کم نہ ہوا تو اساتذہ و ملازمین کی تنخواہیں بند ہونے کا اندیشہ ہے۔ چینل 24  کو موصول ہونے والی دستاویزات کے مطابق مالی سال دو ہزار دس گیارہ میں حکومت نے یونیورسٹی کو بارہ کروڑ 54 لاکھ کی گرانٹ دی تھی جو دو ہزار بارہ میں پچاس فیصد کم کر دی گئی اور یوں یونیورسٹی کو پانچ کروڑ ستائیس لاکھ روپے گرانٹ کی مد میں دیے گئے۔ دو ہزار تیرہ میں حکومت نے یونیورسٹی کو 5 کروڑ 83 لاکھ 98 ہزار روپے گرانٹ دی جو دو ہزار چودہ میں ایک کروڑ 24 لاکھ روپے کر دی گئی۔

دو ہزار پندرہ میں حکومت نے یونیورسٹی کی گرانٹ میں مزید کمی کرتے ہوئے ایک کروڑ تین لاکھ روپے جبکہ دو ہزار سولہ میں نواسی لاکھ تریسٹھ ہزار روپے اور دو ہزار سترہ میں 80 لاکھ 50 ہزار روپے کی گرانٹ یونیورسٹی کو جاری کی گئی۔ اولڈ راوینز یونین کی جانب سے فنڈز کی کٹوتی پر احتجاج کیا گیا ہے جس پر وزیر اعلیٰ پنجاب نے پانچ رکنی کمیٹی تشکیل دی ہے، یہ کمیٹی یونیورسٹی کے مالی حالات کا جائزہ لے کر وزیر اعلیٰ پنجاب کو سفارشات پیش کرے گی۔