”گونگے لوگوں کا ملک“

”گونگے لوگوں کا ملک“


24نیوز :کبھی ایسا نہیں ہوتا کہ دو خواتین کسی جگہ اکیلی ہوں اور چپ ہوں،ملتے وقت ایک دوسری سے اجنبی ہوں گی لیکن جب الوداع ہونگی تو پکی دوست بن کر اٹھیں گی،یہ صرف پاکستان میں ہی نہیں پوری دنیا میں ایسا ہی منظر دیکھنے کوملتا ہے، پاکستان میں تو مردوں کا بھی ایسا ہی ہے حال چال سے بات شروع ہوتی ہے اور قومی اور بین الاقوامی مسئلوں تک کھنچتی چلی جاتی ہے لیکن ایک ملک ایسا ہے جہاں لوگوں باتیں کرتے دیکھنے کیلئے انسان ترس جاتا ہے۔
یہ ایک ایسا ملک ہے جہاں ہلکی پھلکی گپ شپ کو بہت خراب تصور کیا جاتا ہے۔ جہاں خاموشی ہی تہذیب و ثقافت ہے۔ جہاں لوگ ایک دوسرے سے یہ پوچھنا بھی پسند نہیں کرتے کہ کیا حال ہے۔
شمالی یورپی ممالک فن لینڈ میں لوگوں کا خیال ہے کہ اگر بات بہت ضروری نہ ہو تو خاموش رہنا بہتر ہے۔ وہاں لوگ اس مقولے پر دل و جان سے عمل کرتے ہیں کہ ’اگر گفتگو چاندی ہے تو خاموشی سونا ہے، فن لینڈ میں قریبی دوستوں کو چھوڑ دیں تو دو شناسا لوگوں کے درمیان بھی زیادہ بات نہیں ہوتی ہے۔
آپ عوامی جگہ پر بیٹھے ہوں، ٹہل رہے ہوں یا میٹرو میں سفر کر رہے ہوں کوئی بات کرتا نظر نہیں آئے گا۔ صرف سناٹا پھیلا ہوگا،لوگ اپنے آس پاس کے نامعلوم لوگوں سے بے فکر رہتے ہیں، بات نہیں کرتے۔ ایسے ماحول میں کسی دوسرے ملک کے لوگ شور مچانے والے سمجھے جاتے ہیں۔