ترقی وہی جوماحول دوست بھی ہو،سی پیک نہیں بلکہ سرسبز سی پیک چاہیے

ترقی وہی جوماحول دوست بھی ہو،سی پیک نہیں بلکہ سرسبز سی پیک چاہیے


24 نیوز: ترقی بہت ضروری ہے لیکن اس کی قیمت میں ہمیں قدرتی ماحول کی قربانی نہ دینی پڑجائے،پاک چین اقتصادی راہدای جیسا عظیم منصوبہ یقیناملک کی حالت بدل سکتاہے۔لیکن اس منصوبے سے کچھ ماحولیاتی خدشات بھی جڑے ہیں۔

تفصیلات کے مطابق ملکی خوشحالی کاراستہ یقنا سی پیک ہے لیکن ہمیں صرف سی پیک نہیں بلکہ سرسبزاورہرابھراسی پیک چاہیے۔کیوں ترقی وہی بہترہے جوماحول دوست بھی ہو۔چاہے شاہراہیں بن جائیں،فیکٹریاں بن جائیں،،لیکن اگرپینے کوصاف پانی اورسانس لینے کوتازہ ہوانہ ملے توایسی ترقی کااچارڈالناہے۔

سبز پہاڑاورسبز پانی کے موضوع پر لاہورمیں پروگرام ہوا۔جس میں پاک چین اقتصادی کوریڈور کےماحولیاتی اثرات پرسنگین خدشات کااظہارکیاگیا۔ماہرین کا کہناتھا ابھرتی ہوئی معیشت چین کو بھی ترقی کی راہ میں تلخ ماحولیاتی تجربات کاسامنا کرنا پڑا۔اس لیے ہمیں وہ غلطیاں نہیں دہرانی چاہیے جوچین نےکیں۔

ماہرین کے مطابق سی پیک جیساعظیم منصوبہ پاکستانی آبی حیات کوبھی متاثرکرسکتاہےجبکہ درختوں اورپودوں کی ہریالی کوبھی نقصان ہوسکتاہے۔ان سب خطروں سےبچاؤ کے لیے ہمارےپاس چین کا ماحول دوست ترقی پروگرام جیسی مثال موجودہے جس پرچل کرہم ہریالی بھرے سی پیک کوخوشحال پاکستان کی چابی بناسکتے ہیں۔