کراچی:پولیس فائرنگ سے نو جوان جاں بحق،لواحقین کا احتجاج

کراچی:پولیس فائرنگ سے نو جوان جاں بحق،لواحقین کا احتجاج


کراچی ( 24نیوز ) کراچی کا خلجی گوٹھ میدان جنگ بن گیا، منشیات فروشوں کے خلاف پولیس کے آپریشن کے دوران فائرنگ کے نتیجے میں ایک 17 سالہ نوجوان جاں بحق جبکہ ایک زخمی ہوگیا۔
سینئر سپرنٹنڈنٹ پولیس (ایس ایس پی) ملیر شیراز نذیر نے بتایا کہ پولیس نے خلجی گوٹھ میں منشیات فروشوں جنت گل اور ابراہیم کے اڈے پر سرچ آپریشن کیا، جس کے دوران منشیات فروشوں نے پولیس پر فائرنگ کردی، منشیات فروشوں نے پولیس پر پتھراو بھی کیا، جس سے چند پولیس اہلکار زخمی بھی ہوئے،شیراز نذیر نے مزید بتایا کہ پولیس کی جوابی کارروائی کے دوران منشیات فروش زخمی ہوا جبکہ پولیس نے 2 منشیات فروشوں کو گرفتار کرلیا۔


دوسری جانب علاقہ مکینوں کا دعویٰ ہے کہ پولیس نے خلجی گوٹھ میں چھاپہ مارکے 10 افراد کو حراست میں لیا اور واپس جانے سے پہلے ہوائی فائرنگ کی،علاقہ مکینوں کے مطابق پولیس کی فائرنگ کی زد میں آکر ایک نوجوان جاں بحق جبکہ دوسرا زخمی ہوگیا،جاں بحق نوجوان کی شناخت 17 سالہ بلال کے نام سے ہوئی ہے،واقعے میں زخمی ہونے والے 18 سالہ نوجوان شکیل کو طبی امداد کے لیے جناح ہسپتال منقل کردیا گیا۔


واقعے کے خلاف علاقہ مکینوں نے موٹروے ایم 9 پر جاں بحق نوجوان کی لاش کے ہمراہ احتجاج کیا اور سپرہائی وے کے دونوں ٹریک ٹریفک کے لیے بند کردیئے،اس دوران مظاہرین نے پولیس موبائل اور گڈاپ تھانے پر پتھراو بھی کی،جس پر پولیس کی جانب سے مظاہرین کو منشتر کرنے کے لیے شیلنگ کی گئی۔


دوسری جانب اسسٹنٹ انسپکٹر جنرل (اے آئی جی) امیر شیخ نے موٹر وے ایم 9 پر پولیس کی مبینہ فائرنگ کا نوٹس لے کر واقعے کی تحقیقات کے لیے ڈی آئی جی کی نگرانی میں تحقیقاتی ٹیم بنادی۔آئی جی امیر شیخ نے واقعےکی فوری انکوائری اور ذمہ داروں کا تعین کرکے رپورٹ دینے کی ہدایت بھی کی۔
امیر شیخ کا کہنا تھا کہ فائرنگ میں اگر پولیس ملوث ہوئی تو ذمہ داروں کا تعین کرکے مقدمہ درج کیا جائے گا۔