"ہماری فوج اور پاکستان کا بچہ بچہ جنگ کیلئے تیار ہے"



اسلام آباد( 24نیوز ) فواد چودھری نے کہا کہ دو ایٹمی طاقتیں ایک دوسرے کی آنکھوں میں آنکھیں ڈال کر کھڑی ہے ، مودی لکیر کھینچ کر علاقے کو تقسیم کرنے کی کوشش کر رہا ہے,ہماری فوج اور پاکستان کا بچہ بچہ جنگ کیلئے تیار ہے.

تفصیلات کےمطابق وفاقی وزیر سائنس اینڈ ٹیکنالوجی فواد چودھری نےمیڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ کشمیر میں کرفیو کا آج 21 واں روز ہے، کشمیری گھروں سے باہر نہیں نکل پا رہے، کرفیو کے باعث زندگی مفلوج ہو کر رہ گئی ہے، مودی لکیر کھینچ کر علاقے کو تقسیم کرنے کی کوشش کر رہا ہے,بھارت کے ساتھ معاملات کنٹرول کرنے کیلئے کیا کچھ نہیں کیا .

وفاقی وزیر کا کہناتھاکہ وزیراعظم نے بھارت سے کہا ایک قدم بڑھاؤ ہم دو قدم بڑھائیں گے،اس وقت دو ایٹمی طاقتیں ایک دوسرے کی آنکھوں میں آنکھیں ڈال کر کھڑی ہے،عالمی برداری نے کردار ادا نہ کیا تو نتائج کا سامنا کرنے کیلئے تیار رہنا چاہئے،بھارت جنگ چاہتا ہے تو پاکستان جنگ کیلئے تیار ہے،اگر آپ ہمیں مکا دکھائیں گے تو ہم جبڑا توڑنے کیلئے تیار ہیں۔

فواد چودھری کا کہناتھا کہ مقبوضہ کشمیر کے لوگوں کو بنیادی انسانی حقوق دئیے جائیں ،مسئلہ کشمیر ایک بین الاقوامی مسئلہ ہے،الیکشن جیتنے کے بعد مودی کی گردن میں سریا آ گیا ہے، 3 جنگیں پہلے لڑ چکے چوتھی بھی لڑیں گے،اقوام کو اپنی جنگیں خود لڑنی پڑی ہیں،امن اور جنگ دونوں کیلئے تیار ہیں،27 ستمبر کو وزیراعظم عمران خان اقوام متحدہ میں اہم تقریر کریں گے۔

ان کاکہناتھا کہ ہماری فوج اور پاکستان کا بچہ بچہ جنگ کیلئے تیار ہے،  کشمیر کے مسئلےپر ترکی ہمارے ساتھ کھڑا ہے،فارن پالیسی کمزور نہیں معاشی پالیسی کی کمزوری ہے،صدر ٹرمپ نے عمران خان اور مودی سے دو ،دو بار بات کی،متحدہ عرب امارات کی جانب سےمودی کو ایوارڈ پرپاکستان کو مایوسی ہوئی، مودی نہیں چاہتا کہ کشمیر مسئلے پر کوئی عالمی لیڈر بات کرے ۔

قبل ازیں لاہور میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے وفاقی وزیر کا کہناتھا کہ پاکستان بھی 75 ارب ڈالر کی سرمایہ کاری تو اس کی بھی اہمیت ہو گی،بھارت نے کشمیر کو جیل میں تبدیل کر دیا ہے،فضل الرحمان کی سربراہی میں کشمیر کمیٹی نے 3 سال میں 22 کروڑ خرچ کئے،فضل الرحمان کیلئے اسلام نہیں اسلام آباد اہم ہے۔

سفارتی جنگ جیت چکے ہیں، مودی نے سمجھا تھا آرام سے ہر چیز ہضم ہو جائے گی، مودی فاشسٹ نازی حکومت کی نمائندگی کر رہے ہیں،اپنی ایک ٹویٹ میں ان کا کہناتھا کہ پاکستان میں ایک طبقہ پاکستان سے زیادہ عرب اور ایران کیلئے فکرمند رہتا ہے، نریندر مودی سے ان ممالک کے تعلق میں ان لوگوں کیلئے سبق ہے کہ اپنی قوم سے بڑھ کر کچھ نہیں۔

ان کا مزید کہناتھا کہ امہ نہیں آپ کے ملک کی سرحدیں مقدس ہیں، آپ کی عیدیں ہوں یا پالیسیاں اپنی سرحدوں کو مقدس جانیں اگر مضبوط قوم بننا ہے۔

پاکستان کا سفارتی ڈاکٹرائن بالکل درست ہے،پاکستان بالکل درست سمت میں آگے بڑھ رہا ہے،دنیا میں اب کوئی اسلامی بلاک نہیں رہا،ملک میں پناہ گاہوں کا نظام کامیابی کے ساتھ چل رہا ہے،ندیم افضل کے بارے انہوں نے کہا کہ وہ وزیراعظم کی ٹیم کا اٹوٹ حصہ ہیں۔