امریکا اور چین پھر آمنے سامنے

امریکا اور چین پھر آمنے سامنے


واشنگٹن(24 نیوز)عالمی تجارتی جنگ میں تیزی، ٹرمپ کی چین کے بعد فرانس کو بھی پابندیوں کی دھمکی، چین نے کہا ہے کہ بدمعاش واشنگٹن کو اپنے حصہ کا کڑوا پھل کھانا پڑے گا۔چین کا کہنا ہے کہ امریکا غلط اقدام روکے ورنہ نتائج بھگتنے ہوں گے ۔

تفصیلات کے مطابق چین نے امریکا سے 75 ارب ڈالر کی درآمدی اشیا پر 10 فیصد ڈیوٹی لاگو کرنے کا اعلان کیا ہے جس پرامریکی صدر نے اپنی کمپنیوں کو چین چھوڑنے کا حکم دے دیا۔امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے چین کی 550ارب ڈالر کی تجارتی مصنوعات پر مزید 5فیصد اضافی محصولات عائد کرنے کا اعلان کر دیا۔ ٹرمپ نے چین کےبعد فرانس کو بھی پابندیوں کی دھمکی دیتے ہوئے دھمکایا کہ اگر فرانس ڈیجیٹل ٹیکس نہیں ہٹاتا تو امریکا بھی فرانس کی شراب پر بھاری ٹیکس عائد کردیگا۔

چین نے بھی امریکا پر 75 ارب ڈالرز کی امریکی اشیا پر ڈیوٹی کا اعلان کیا ہے۔چین کا کہنا ہے کہ امریکا غلط اقدام روکے ورنہ نتائج بھگتے گا ۔ ادھر چین نے کہاہےکہ برمعاش واشنگٹن کو اپنے حصے کا کڑوا پھل کھانا پڑیگا جبکہ یورپی کونسل کے صدر ڈونلڈ ٹُسک نے کہا ہے کہ اگر امریکا فرانسیسی شراب پر اضافی محصولات عائد کرتا ہےتو یورپی یونین اس کا جواب دے گی۔

یورپی یونین کونسل کے صدر ڈونلڈ ٹسک نے امریکا کو خبردار کیا کہ ٹرمپ کی چین اور یورپ کے ساتھ تجارتی کشیدگی کے نتیجے میں پوری دنیا کی اقتصادی صورتحال متاثر ہوگی اور بے روزگاری بڑے گی، اگر امریکا فرانسیسی شراب پر اضافی محصولات عائد کرتا ہے، تو یورپی یونین اس کا جواب دے گی۔

چین اور امریکا کے تجارتی تنازع میں شدت کو ماہرین عالمی تجارت کے لیے نقصان دہ قرار دے رہے ہیں اور انہیں خدشہ ہے کہ اس سے عالمی کساد بازاری جنم لے سکتی ہے۔

Malik Sultan Awan

Content Writer