ملکی تاریخ کا بڑا ٹیکس چوری سکینڈل منظر عام پرآگیا

ملکی تاریخ کا بڑا ٹیکس چوری سکینڈل منظر عام پرآگیا


کراچی(24نیوز) ملکیخزانے کو بلڈرز  نےبھی زورکا جھٹکالگا دیا،533 بلڈرزنے ملکی خزانے کو زورکا جھٹکا لگادیا، چار سال میں 94 ہزار ارب روپے کی ٹیکس چوری کا انکشاف ہواہے۔

 تفصیلات کے مطابق ملکی خزانے کو بلڈرز  نےبھی زورکا جھٹکالگا دیا، ہزاروں ارب روپے کی ٹیکس چوری کا  سکینڈل منظر عام پرآگیا،چار سال میں 94 ہزار ارب روپے ٹیکس چوری کرکے بچائے گئے، آڈیٹر جنرل کی خصوصی رپورٹ کے مطابق کراچی اور اندرون سندھ کے 533 بلڈرز کا ایف بی آر سے گٹھ جوڑ ہے،  بلڈرز نے قومی خزانے کو 94 ہزار ارب کا نقصان پہنچایا،  2012 سے 2016 تک سینکڑوں منصوبے مکمل کیے،  بلڈرز نے خزانے میں ٹیکس جمع نہیں کرایا۔ 

آڈٹ رپورٹ میں انکشاف کیا گیا کہ ایف بی آرکے چھ فیلڈ دفاتر نے بلڈرز کو ٹیکس چھوٹ دی،  آرٹی او حیدر آباد اورسکھر نے بلڈرز کے ذمہ ٹیکس کا حساب ہی نہیں کیا،  2010 میں آرٹی او ٹو اور تھری میں 17 سو 25 ارب کی ٹیکس چوری کی گئی۔

 2011 میں پانچ کروڑ اور 2012 میں 92 ارب روپے سے زائد کی ٹیکس چوری کی گئی ، آڈٹ رپورٹ میں سفارش کی گئی ہے قومی خزانے میں ٹیکس چوری کی رقم جمع کرائی جائے اور ٹیکس چوری میں ملوث افراد کے خلاف کارروائی کی جائے۔

M.SAJID KHAN

CONTENT WRITER