خواجہ آصف نا اہلی کیس، ریکارڈ جمع، پی ٹی آئی نے اقامہ چیلنج کر دیا


اسلام آباد (24 نیوز) شہر اقتدار کی عدالت عالیہ میں خواجہ آصف کا اقامہ چیلنج کرنے کی عثمان ڈار کی درخواست پر سماعت وکیل عثمان ڈار سکندر بشیر مہمند نے ریکارڈ عدالت میں جمع کرادیا۔

ریکارڈ کے مطابق خواجہ آصف نے نیشنل بینک آف ابو ظہبی میں اکاؤنٹ کھلوانے کے لیے ابوظہبی کا ڈومیسائل جمع کرایا۔

تفصیلات کے مطابق اسلام آباد ہائی کورٹ کے لارجر بنچ نے خواجہ آصف کی نا اہلی کے لیے عثمان ڈار کی درخواست پر سماعت کی۔ عثمان ڈار کے وکیل اسکندر بشیر نے حقائق پر مبنی پر دلائل مکمل کر لیے۔ آئندہ سماعت پر قانونی نکات پر دلائل دیں گے۔

وکیل عثمان ڈار نے مؤقف اختیار کیا کہ خواجہ آصف نے نینشل بینک آف ابو ظہبی کا اکاؤنٹ ٹیکس گوشواروں اور کاغذات نامزدگی میں ظاہر نہیں کیا۔ عثمان ڈار کی جانب سے ایڈوکیٹ سکندر بشیر عدالت میں پیش ہوئے۔

ایڈوکیٹ سکندر بشیر نے عدالت کو بتایا کہ خواجہ آصف نے ملک سے باہر کاروبار بھی چھیایا۔ جسٹس عامر فاروق نے استفسار کیا کہ بیرون ملک ریسٹورنٹ بنانے کے لیے رقم کہاں سے آئی؟ جس پر وکیل عثمان ڈار نے کہا کہ خواجہ آصف نے بیوی اور بیٹی کے اکاؤنٹس بھی ظاہر نہیں کیے۔ خواجہ آصف نے گوشواروں میں کم شیئرز ظاہر کیے۔ جولائی دو ہزار پندرہ میں نیشنل بینک آف ابو ظہبی سے تمام رقم نکال لی گئی۔

وکیل عثمان ڈار نے کہا کہ خواجہ آصف نے مختلف اوقات 22ملین روپے بیوی اور بیٹی کے اکاؤنٹس میں منتقل کیے۔ خواجہ آصف نے گوشواروں اور کاغذات نامزدگی میں 6اکاؤنٹس کو ظاہر کیا۔ ظاہر کئے گئے اکاؤنٹس میں تین پاکستان ایک دبئی جبکہ دو نیویارک کے اکاؤنٹس ہیں۔ نیشنل بینک آف ابو ظہبی کا اکاؤنٹ کہیں ظاہر نہیں کیا گیا۔

واضح رہے کہ پی ٹی آئی رہنما عثمان ڈار نے خواجہ آصف کی نا اہلی کے لیے درخواست دائر کر رکھی ہے۔ عدالت نے کیس کی سماعت یکم فروری تک ملتوی کر دی۔