قومی و صوبائی اسمبلیوں کے حلقوں کے غیر حتمی، غیر سرکاری نتائج کا اعلان


اسلام آباد( 24نیوز ) عام انتخابات 2018 کے لیےپولنگ کا وقت شام 6 بجے ختم ہوا۔جس کے بعد  الیکشن کمیشن کے ضابطہ اخلاق کی پاسداری کرتے ہوئے 24نیوز نے نتائج کا اعلان 7 بجے کے بعد شروع کیا۔

اسلام آباد کے غیر حتمی نتائج

پاکستان کے دارالحکومت اسلام آباد میں  این اے 54 کا مکمل غیر حتمی، غیر سرکاری نتیجہ آگیا۔ پی ٹی آئی کے اسد عمر 56 ہزار 945 ووٹ لیکر کامیاب جبکہ ن لیگ کے انجم عقیل 32 ہزار 991 ووٹ لے کر دوسرے نمبر پر ہیں۔  این اے 52 کا غیر حتمی غیر سرکاری نتیجہ کے مطابق تحریک انصاف کے راجا خرم شہزاد 64690 ووٹ لے کر پہلے نمبر، پیپلزپارٹی کے محمد افضل کھوکھر 34072 ووٹ لے کر دوسرے نمبر جبکہ ن لیگ کے طارق فضل چودھری 33519 ووٹ لے کر تیسرے نمبر پر ہیں۔

بہاولپور کے غیر حتمی نتائج

بہاولپور کے  این اے 173 کے مکمل غیر حتمی، غیر سرکاری نتائج کا اعلان ہوگیا۔ ن لیگ کے نجیب الدین اویسی 78 ہزار 180 ووٹ لے کر کامیاب جبکہ پی ٹی آئی کی خدیجہ عامر 50 ہزار 420 ووٹ لے کر دوسرے نمبر پر ہیں۔  این اے 171 کےن لیگ کے میاں ریاض حسین پیرزادہ 59 ہزار 500 ووٹ لے کر کامیاب ہوگئے جبکہ پی ٹی آئی کے چودھری نعیم الدین 53 ہزار 109 ووٹ لے کر دوسرے نمبر پر ہیں۔  پی پی 252 کا مکمل غیر حتمی، غیر سرکاری نتیجہ کے مطابق مسلم لیگ ن کے شعیب اویسی 31 ہزار 165 ووٹ لے کر کامیاب ہوئے جبکہ پیپلز پارٹی کے شاہ رخ ملک 17 ہزار 365 ووٹ لیکر دوسرے نمبر پر ہیں۔

ہری پور کے نتائج

ہری پور، این اے 17 کے مکمل غیر حتمی، غیر سرکاری نتائج کا اعلان ہوگیا۔ پاکستان تحریک انصاف کے عمر ایوب خان ایک لاکھ 66 ہزار 786 ووٹ لے کر کامیاب جبکہ ن لیگ کے بابر نواز خان ایک لاکھ 49 ہزار 292 ووٹ لے کر دوسرے نمبر پر ہیں۔

شکر گڑھ کے غیر حتمی نتائج

شکر گڑھ،این اے 77 کے 224 پولنگ اسٹیشنز کے غیر سرکاری غیر حتمی نتائج کے مطابق ن لیگ کی مہناز اکبر عزیز 66434 ووٹ لے کر پہلے نمبر پر  جبکہ 

آزاد امیدوار طارق انیس 36351 ووٹ لے کر دوسرے نمبر پر ہیں۔

شکار پور کے غٰیر حتمی نتائج

شکارپور کے این اے 198 کے غیر حتمی نتائج کے مطابق پیپلز پارٹی کے عابد حسین بھیو 66 ہزار 129 ووٹ لے کر پہلے نمبر پر جبکہ آزاد امیدوار ابراہیم جتوئی 53 ہزار 339 ووٹ لے کر دوسرے نمبر پر ہیں۔

دادو کے نتائج :

دادو، این اے 235 کے مکمل غیر حتمی، غیر سرکاری نتائج کا اعلان ہوگیا۔ پیپلز پارٹی نے ایک بار پھر بازی مارلی۔ پیپلز پارٹی کے رفیق احمد جمالی 71 ہزار 900 ووٹ لیکر کامیاب جبکہ پی ٹی آئی کے کریم علی جتوئی 51 ہزار 300 ووٹ لیکر دوسرے نمبر پر ہیں۔

لاہور کے غیر حتمی نتائج

لاہور، پی پی 160 کے مکمل غیر حتمی، غیر سرکاری نتائج کے مطابق پی ٹی آئی کے میاں محمود الرشید 59 ہزار 247 ووٹ لے کر کامیاب ہوگئے جبکہ ن لیگ کے توصیف شاہ 49 ہزار 549 ووٹ لے کر دوسرے نمبر پر ہیں ۔پی پی 150 سے ٹوٹل پولنگ سٹیشن 153 کے غیر حتمی غیر سرکاری نتیجہ بھی آگیا۔ن لیگ کے بلال یاسین 58315 ووٹ لے کر کامیاب جبکہ تحریک انصاف کے امیدوار چوہدری اصغر گجر نے37828 ووٹ لے کر دوسرے نمبر پر جبکہ بلال یاسین نے تحریک انصاف کے امیدوار چوہدری اصغر گجر سے 20487 ووٹ سے برتری حاصل کرلی.

این اے 135 کے مکمل غیر حتمی، غیر سرکاری نتائج کا فیصلہ ہوگیا۔ پی ٹی آئی کے ملک کرامت علی 64ہزار 765 ووٹ لے کر کامیاب ہوئے جبکہ 

ن لیگ کے ملک سیف الملوک 55 ہزار 431ووٹ لے کر دوسرے نمبر پر ہیں۔ 
لاہور، این اے 133 کے مکمل غیر سرکاری، غیر حتمی نتائج کے مطابق ن لیگ کے محمد پرویز ملک 87 ہزار 506 ووٹ لے کر کامیاب ہوئے جبکہ پی ٹی آئی کے اعجاز چودھری75 ہزار 731 ووٹ لے کر دوسرے نمبر پر ہیں۔

لاہور، پی پی 161 کے مکمل غیر حتمی، غیر سرکاری نتائج کے مطابق پاکستان تحریک انصاف کے ملک ندیم عباس 34 ہزار 994 ووٹ لیکر کامیاب اور 

ن لیگ کے فیصل ایوب 30 ہزار 987 ووٹ لے کر دوسرے نمبر پر ہیں۔ 

این اے 125سے353 میں سے 90 سٹیشنز کا نتیجہ آگیاہے ، نتائج کے مطابق مسلم لیگ ن کےوحید عالم خان 29464ووٹ حاصل کرکے پہلے نمبر پر رہے جبکہ تحریک اںصاف کی امیدوار یاسمین راشد نے 25663 ووٹ حاصل کیے اور دوسرے نمبر پر رہی۔

 پی پی 144 کے مکمل غیر حتمی، غیر سرکاری نتائج کے مطابق ن لیگ کے سمیع اللہ خان 45 ہزار 525 ووٹ لیکر کامیاب اور پی ٹی آئی کے چودھری خالد محمود 37 ہزار ووٹ لیکر دوسرے نمبر پر ہیں۔حلقہ پی پی 145 کے مکمل غیر حتمی، غیر سرکاری نتائج کے مطابق ن لیگ کے غزالی سلیم بٹ 47 ہزار 479 ووٹ لیکر کامیاب جبکہ پی ٹی آئی کے ملک محمد آصف جاوید 28 ہزار 23 ووٹ لیکر دوسرے نمبر پر ہیں۔ 

 این اے 123 کا مکمل غیر حتمی، غیر سرکاری نتیجہ کے مطابق ن لیگ کے ملک ریاض 97 ہزار 193 ووٹ لیکر کامیاب اور پی ٹی آئی کے مہر واجد عظیم 72 ہزار 535 ووٹ لیکر دوسرے نمبر پر ہیں۔پی پی 154میں مسلم لیگ ن کے امیدورچوہدری باؤ اختر نے69 547 ووٹ حاصل کیے۔

این اے 125سے353 میں سے 173پولنگ سٹیشنز کا غیر ختمی غیر سرکاری نتیجہ آ گیا،تحریک انصاف کی یاسمین راشد 62105 ووٹ لے کر پہلے نمبر پر آ گئی جبکہ مسلم لیگ ن کے وحید عالم خان 60811ووٹ لے کردوسرے نمبر پر رہے۔پی پی 158سے135میں 63پولنگ سٹیشنز کے نتائج آ گئے، تحریک انصاف کے عبدالعلیم خان23459ووٹ لے کر پہلے نمبر آئے،جبکہ مسلم لیگ ن کےامیدواررانا احسن  19816 ووٹ لے کر دوسرے نمبر پر رہے ۔

ملتان کے غیر حتمی نتائج

شاہ محمود قریشی کا وزیر اعلیٰ پنجاب بننے کا خواب چکنا چور ہوگیا۔ شاہ محمود قریشی حلقہ پی پی 217 سے ہارگئے۔ شاہ محمود قریشی کو آزاد امیدوار سلمان نعیم نے شکست دے دی۔ سلمان نعیم کو 34481، شاہ محمود قریشی کو 31471 وٹ ملے۔پی پی 211 سے سابق وزیر اعظم یوسف رضا گیلانی کے صاحبزادے علی حیدرگیلانی کامیاب ہوئے۔علی حیدر گیلانی کو 37 ہزار 928 ووٹ ملےجبکہ تحریک انصاف کے خالد جاوید وڑائچ26 ہزار533 ووٹ لیکر دوسرے نمبر پرہیں۔

خانیوال کے غٰیر حتمی نتائج

خانیوال، پی پی 205 کا مکمل غیر حتمی، غیر سرکاری نتیجہ کے مطابق پی ٹی آئی کے حامد یار ہراج 57 ہزار 124 ووٹ لیکر کامیاب جبکہ ن لیگ کے چ چودھری فضل الرحمن 54 ہزار 243 ووٹ لیکر دوسرے نمبر پر ہیں۔ پی پی 210 مسلم لیگ ن کے عطاء الرحمن، رکن پنجاب اسمبلی منتخب  عطاء الرحمن نے 48 ہزار 797 ووٹ حاصل کیے۔ جبکہ پی ٹی آئی کے خالد جاوید 45 ہزار 229 ووٹ لیکر دوسرے نمبر پر ہیں۔

گوجرانوالہ کے غیر حتمی نتائج کا اعلان

گوجرانوالہ، پی پی 51 کے مکمل غیر حتمی، غیر سرکاری نتائج کے مطابق ن لیگ کے شوکت منظور چیمہ 59 ہزار 267 ووٹ لیکر کامیاب ہوئے اور پی ٹی آئی کے محمد شبیر اکرم 27 ہزار 431 ووٹ لیکر دوسرے نمبرپر ہیں۔ 

فیصل آباد کے غیر حتمی نتائج

فیصل آباد، پی پی 113 سے رانا ثناء اللہ ہار گئے۔پی ٹی آئی کے محمد وارث عزیز 61 ہزار 41 ووٹ لیکر کامیاب جبکہ رانا ثناء اللہ نے 56 ہزار 54 ووٹ حاصل کیے۔

کوئٹہ کے نتائج

کوئٹہ، پی بی 24 کا مکمل غیر حتمی، غیر سرکاری نتیجہ کے مطابق اے این پی کے ملک نعیم خان 6 ہزار 531 ووٹ لیکر پہلے نمبر پر کامیاب، ایم ایم اے کے سازالدین 5103 ووٹ لیکر دوسرے نمبر پر جبکہ پشتونخوا میپ کے یوسف خان 4289 ووٹ لیکر تیسرے نمبر پر ہیں۔ پی پی 30 کے مکمل غیر حتمی، غیر سرکاری نتائج جبکہ بلوچستان نیشنل پارٹی مینگل کے احمد نواز 10ہزار 102 ووٹ لیکر کامیاب ہوئے جبکہ نیشنل پارٹی کے میر عطاء محمد بنگلزئی 3ہزار 425 ووٹ لیکر دوسرے نمبر پر ہیں۔

وزیرآباد کے غیر حتمی نتائج  

وزیرآباد، این اے 79 کے 255 پولنگ اسٹیشنز کا غیر سرکاری نتیجہ کے مطابق ن لیگ کے ڈاکٹر نثار چیمہ ایک لاکھ 2 ہزار 787 ووٹ لیکر آگے اور 

پی ٹی آئی کے محمد احمد چٹھہ 84 ہزار 665 ووٹ لیکر دوسرے نمبر پر ہیں۔

  ایبٹ آباد کے غیر حتمی نتائج

ایبٹ آباد، این اے 16 کے مکمل غیر حتمی، غیر سرکاری نتائج   کا اعلان ہوگیا۔ پی ٹی آئی کے علی خان جدون ایک لاکھ 12 ہزار 360 ووٹ لے کر کامیاب جبکہ ن لیگ کے مہابت خان 89 ہزار 112 ووٹ لے کر دوسرے نمبر پر ہیں۔ 

 قبائلی علاقہ کا غیر حتمی نتائج

قبائلی علاقہ این اے 51 کا مکمل غیر حتمی، غیر سرکاری نتیجہ کا اعلان کردیا گیا۔ ایم ایم اے کے عبدالشکور 20 ہزار 65 ووٹ لے کر کامیاب ہوگئے جبکہ 

پی ٹی آئی کے قیصر جمال 18 ہزار 335 ووٹ لے کر دوسرے نمبر پر ہیں۔

اپر دیر کے غیر حتمی نتائج

اپر دیر، این اے 5 کے مکمل غیر حتمی، غیر سرکاری نتائج کے مطابق پی ٹی آئی کے صاحبزادہ صبغت اللہ 41 ہزار 397 ووٹ لے کر پہلے نمبر پر جبکہ 

پاکستان پیپلز پارٹی پارلیمنٹیرین کے نجم الدین خان 31 ہزار ووٹ لے کر دوسرے نمبر پر ہیں۔ 

چترال کے غیر حتمی نتائج

چترال، این اے 1 کے مکمل غیر حتمی، غیر سرکاری نتائج کے مطابق متحدہ مجلس عمل کے مولانا عبدالاکبر چترالی 26 ہزار 132 ووٹ لیکر کامیاب اور 

پی ٹی آئی کے عبداللطیف 17 ہزار 644 ووٹ لیکر دوسرے نمبر پر ہیں۔چترال، این اے 46 سے پاکستان پیپلز پارٹی پارلیمنٹیرینز کے ساجد حسین طوری 21 ہزار 461 ووٹ لیکر کامیاب اور پی ٹی آئی کے سید اقبال میاں 16 ہزار 934 ووٹ لیکر دوسرے نمبر پر ہیں۔

لودھراں کے غیر حتمی نتائج

لودھراں پی پی 227 کا غیر حتمی غیر سرکاری نتیجہ  آگیا۔ مسلم لیگ ن کے صدیق بلوچ 46072ووٹ لیکر کامیاب  جبکہ  تحریک انصاف کے امیدوار نواب امان اللہ 39022ووٹ حاصل کیے۔

کراچی کے غیر حتمی نتائج

پاکستان تحریک انصاف کو پنجاب کے بعد کراچی میں بھی قومی اسمبلی کی نشستوں پر برتری حاصل ہے۔ کراچی میں 21 قومی اسمبلی کی نشستوں میں سے 10 پر پی ٹی آئی کو برتری ہے۔ پیپلز پارٹی کو 4، ایم کیو ایم کو 7 نشستوں پر برتری حاصل ہے جبکہ پاک سرزمین پارٹی اب تک میدان سے باہر ہے۔

اسلام آباد کے حلقے این اے 54 کے 27پولنگ اسٹیشن کے غیر سرکاری اور غیر حتمی نتیجہ کے مطابق  پی ٹی آئی کے اسد عمر 8311 لے کر پہلے نمبر پر مسلم لیگ ن کے انجم عقیل 3373 لے کر دوسرے نمبر پر  ہیں۔

این اے 155 کے 60 پولنگ اسٹیشنز کے غیر حتمی نتائج کے مطابق  ن لیگ کے شیخ طارق رشید کے 17885 ووٹ، پی ٹی آئی کے عامر ڈوگر 17508 ووٹ ہیں۔

ڈیرہ اسماعیل خان  میں این اے 38کے تین پولنگ اسٹیشنز کے غیر حتمی وغیرسرکاری نتائج موصول ہوگئے۔  ایم ایم اے کے مولانافضل الرحمان 936ووٹ لے کر پہلے نمبر پر،  آزادامیدواروقاراحمد خان 556ووٹ لے کر دوسرے نمبر، پی ٹی آئی کے علی امین 358ووٹ لے کر تیسرے نمبر،  پی پی پی کے فیصل کریم کنڈی113ووٹ لے کر چوتھے نمبر پر ہیں۔

این اے 70 کے 100 پولنگ اسٹیشنز میں تحریک انصاف کے فیض الحسن شاہ کے 31371 ووٹ ہیں جبکہ مسلم لیگ ن کے جعفراقبال کے 15470ووٹ ہیں ۔

خیرپور این اے 208 کے پولنگ اسٹیشن نظامانی پر پیپلزپارٹی کی نفیسہ شاہ 171 ووٹ لے کر آگے ہیں۔ جی ڈی اے کے غوث علی شاہ 62 ووٹ حاصل کرکے پیچھے ہے۔ پی ایس 26 کے پولنگ اسٹیشن کمپریہنسو اسکول پر پیپلزپارٹی کے قائم علی شاہ452 ووٹ لے کر سرفہرست ہیں جبکہ جی ڈی اے کے لالا عبدالغفار شیخ 237ووٹ حاصل کرکے دوسرے نمبر پر ہیں۔ 

این اے 110 کے49  پولنگ اسٹیشنز میں تحریک انصاف کے راجہ ریاض کے 12620 ووٹ جبکہ ن لیگ کے رانا محمد افضل کے 12598 ووٹ ہیں۔ 

 پی پی 151،پولنگ سٹیشن نمبر147کاغیر حتمی نتیجہ،پی ٹی آئی کے میاں اسلم اقبال 181ووٹ لیکر آگے ،مسلم لیگ(ن) کے چودھری باقر حسین 110ووٹ لیکر پیچھےرہے۔ پی پی 126پولنگ اسٹیشن نمبر 147کا غیر ختمی نتیجہ،پی ٹی آئی حماد اظہر 181 ووٹ سے آگے،دوسری جانب مسلم لیگ ن کے مہر اشتیاق113 ووٹوں کے ساتھ دوسرے نمبر  رہے،پی پی 171کے پولنگ سٹیشن نمبر77 کا غیر سرکاری نتیجہ آ گیا، مسلم لیگ ن کے رانا محمد طارق70 ووٹوں سے آگےجبکہ پی ٹی آئی کے رانا جاوید عمر20ووٹ لیکر پیچھے رہے۔

مظفرگڑھ کے حلقے این اے 184 کےپولنگ اسٹیشن ۔86 میں جمشید احمد دستی 404 ووٹوں کے ساتھ آ گے  جبکہ پیپلز پارٹی کے نوابزادہ افتخار احمد خان 150 ووٹوں کے ساتھ پیچھے  ہیں۔ آزاد امیدوار ملک قسورکریم لنگڑیال  234 کے ساتھ تیسرے نمبر پر ہیں ۔

قومی اسمبلی کے حلقہ این اے 95 کے پولنگ اسٹیشن نمبر سے 166سے تحریک انصاف کے عمران خان 326 ووٹوں کیساتھ پہلے نمبر پر ہیں جبکہ ن لیگ کے عبیداللہ خان 156ووٹوں کیساتھ دوسرے نمبر پر ہیں۔

قصور این اے 140 پولنگ اسٹیشن نمبر 114  میں تحریک انصاف کے سردار طالب نکٗی 175ووٹوں کے ساتھ آگے ہیں ،مسلم لیگ ن کے رانا محمد حیات خاں 89 ووٹوں کے ساتھ دوسرے نمبر پر ہیں ۔

گجرات کے حلقہ این اے 68 کے 40پولنگ اسٹیشنز کے غیرحتمی نتائج کے مطابق ق لیگ کے چودھری حسین الہیٰ 11808 ووٹوں کیساتھ آگے ہیں جبکہ مسلم لیگ ن غضنفرگل 4142 ووٹوں کیساتھ پیچھے ہیں۔گجرات کے حلقہ این اے 69 کے 14پولنگ اسٹیشنز کے غیرحتمی نتائج کے مطابق ق لیگ کے چودھری پرویز لہیٰ کو 2994ووٹوں کی برتری حاصل ہے۔پرویز الہیٰ 4398ووٹوں کیساتھ آگے ہیں۔ مسلم لیگ ن کے چودھری مبشر1404ووٹوں کیساتھ پیچھے ہیں۔

ڈیرہ اسماعیل خان کے حلقے این اے39 میں 16پولنگ اسٹیشنزکے غیرحتمی و غیرسرکاری نتائج کے مطابق  ایم ایم اے کے مولانافضل الرحمان3197 ووٹوں کے ساتھ آگے ہیں ۔  پی ٹی آئی کے شیخ یعقوب 2161ووٹ لے کر پیچھے ہیں۔

این اے 272 لسبیلہ / گوادر کے 22 پولنگ اسٹیشنز کے غیر حتمی نتائج کے مطابق  محمد اسلم بھوتانی 6299  ووٹ لے کر پہلے نمبر پر ، جام کمال خان 3937 ووٹ لے کردوسرے نمبرپر جبکہ  سردار اختر مینگل 950 ووٹ لے کر تیسرے نمبر پر ہیں۔

 این اے 80 گوجرانوالہ کے 25 پولنگ اسٹیشنوں کے غیرحتمی، غیرسرکاری نتائج کے مطابق پی ٹی آئی کے میاں طارق محمود 7565 ووٹ لے کر آگے ہے جبکہ مسلم لیگ ن کے محمود بشیر ورک 7025 ووٹ لے کر پیچھےہے۔  این اے 81 گوجرانوالہ کے 25 پولنگ اسٹیشنوں کے غیرحتمی، غیرسرکاری نتائج کے مطابق  مسلم لیگ کے خرم دستگیر خان 8871 ووٹ لے کر آگے ہیں جبکہ پی ٹی آئی کے صدیق مہر 5909 ووٹ لے کر پیچھے ہیں۔  این اے 82 گوجرانوالہ کے 25 پولنگ اسٹیشنوں کے غیرحتمی، غیرسرکاری نتائج کے مطابق مسلم لیگ کے بیرسٹر عثمان ابراہیم 7133 ووٹ لے کر آگےجبکہ  پی ٹی آئی کے علی اشرف مغل 6257 ووٹ لے کر پیچھےہیں۔

ننکانہ صاحب سے حلقہ این اے 117 کے پولنگ اسٹیشن نمبر 36 سے تحریک انصاف کے بلال ورک 741 ووٹوں کیساتھ پہلے نمبر پر ہیں، مسلم لیگ ن کے برجیس طاہر153 ووٹوں کیساتھ دوسرے نمبر پر ہیں۔

سیہون شریف کے حلقے پی ایس 80 پولنگ اسٹیشن 11،  پیپلز پارٹی کے سید مراد علی شاہ 575 ووٹوں کے ساتھ آگے  ہیں ۔ سندھ یونائٹیڈ پارٹی کے سید جلال 173 ووٹوں کے ساتھ دوسرے نمبر پر  ہیں۔ 

قومی اسمبلی کے حلقے این اے 57 مری،31 پولنگ اسٹیشنز کے غیر حتمی نتائج کے مطابق  تحریک انصاف کے صداقت عباسی 8120 ووٹ لے کر آگے جبکہ ن لیگ کے شاہد خاقان عباسی 7890 ووٹ کے ساتھ دوسرے نمبر پر ہیں۔

قومی اسمبلی کے حلقہ این اے 110 کے پولنگ اسٹیشن نمبر27 سے تحریک انصاف کے راجہ ریاض 354ووٹوں کیساتھ پہلے نمبرپر ہیں۔  مسلم لیگ ن کے رانا افضل 316ووٹوں کیساتھ دوسرے نمبر پر ہیں۔ 

قصور این اے 140 پولنگ اسٹیشن نمبر 114 ، تحریک انصاف کے سردار طالب نکٗی 175ووٹوں کے ساتھ آگے ہیں ۔مسلم لیگ ن کے رانا محمد حیات خاں 89 ووٹوں کے ساتھ دوسرے نمبر پر ہیں ۔

نوابشاہ میں این اے 213 کے 6 پولنگ اسٹیشنز کے غیر حتمی نتائج ،  پاکستان پیپلز پارٹی  کے آصف علی زرداری 1702 ووٹ لے کر آگے ہیں۔  جی ڈی اے کے امیدوار سردار شیر محمد رند  678 ووٹ لے کر دوسرے نمبر پر ہیں۔ 

پی پی 152 پولنگ سٹیشن بندروڈ سلیم ماڈل سکول کا غیر حتمی نتیجہ آگیا،مسلم لیگ (ن)کےرانامشہود 434ووٹوں کیساتھ آگے ، پی ٹی آئی محمد ارشاد ڈوگر 384ووٹ لیکر پیچھے ہیں۔ این اے 123 پولنگ سٹیشن نمبر 219 کا غیرحتمی نتیجہ،مسلم لیگ ن کے ملک ریاض 443 ووٹ لے کر آگے،تحریک انصاف کے واجد عظیم 289 ووٹ لے کر پیچھے،این اے 136 کے تین پولنگ سٹیشنز کا غیر حتمی نتیجہ،پاکستان تحریک انصاف کے ،1612 ووٹ لے کر آگے،پاکستان مسلم لیگ ن 542 ووٹ لے کر پیچھے رہیں۔

این اے 71 کے 38 پولنگ اسٹیشنز میں تحریک انصاف کے چودھری محمد الیاس کے 12126ووٹ جبکہ مسلم لیگ ن کے عابد رضا کے 7886 ووٹ حاصل کیے۔ 

این اے 29 کے 29 پولنگ اسٹیشن کے نتائج کے مطابق  پی ٹی آئی کے ناصر موسی زئی 14201 ووٹ کے ساتھ آگے  ہیں جبکہ ایم ایم اے کے مفتی نعیم 4764 ووٹوں کے ساتھ دوسرے نمبر پر  ہیں۔  ن لیگ کے امیر مقام کے 1459 ووٹوں کے ساتھ تیسرے نمبر پر ہیں ۔ 

این اے 56 کے10  پولنگ اسٹیشنز کے نتائج کے مطابق تحریک انصاف کے میجرطاہر صادق کے 2359ووٹ آگے جبکہ مسلم لیگ ن کے ملک سہیل کمڑیال کے 1348ووٹ لے کر پیچھے ہیں ۔ 

این اے 206 کے 40 پولنگ اسٹیشنز کے غیر حتمی نتائج کے مطابق پیپلزپارٹی کے سید خورشید شاہ کے 16646 ووٹ،پی ٹی آئی کے طاہر شاہ کے 7862 ووٹ ہیں۔ 

این اے 190 کے پولنگ اسٹیشن نمبر 123 سے آزاد امیدوار امجد کھوسہ 484ووٹوں کیساتھ پہلے نمبر پر ہیں۔ تحریک انصاف کے ذوالفقار کھوسہ 264ووٹوں کیساتھ دوسرے اورپیپلزپارٹی کے عرفان کھوسہ 18ووٹوں کیساتھ تیسرے نمبر پر ہیں۔

گجرات سے حلقہ این اے 69 پولنگ اسٹیشن فوارہ چوک کا غیر حتمی نتیجہ سامنے آگیا۔ مسلم لیگ ق کے چودھری پرویز الٰہی 309، ووٹوں کے ساتھ آگے ہیں جبکہ  نون لیگ کے چودھری مبشر حسین  140 ووٹوں کے ساتھ پیچھے ہیں۔ 

این اے 128 پولنگ سٹیشن نمبر 235 کا غیرحتمی نتیجہ آگیا،مسلم لیگ ن کے شیخ روحیل اصغر 550 ووٹ لے کر آگے،تحریک انصاف کے اعجاز ڈیال 112 ووٹ لے کر پیچھےرہے۔ این اے 132 پولنگ سٹیشن نمبر 73 کا غیر حتمی نتیجہ،مسلم لیگ ن کے شہباز شریف 312 ووٹ لے کر آگے،تحریک انصاف کے چودھری محمد منشاء 201 ووٹ لے کر پیچھے، جبکہ پیپلزپارٹی صرف 69 ووٹ حاصل کر سکی۔

 عمرکوٹ میں حلقہ این اے 220 کے پولنگ اسٹیشن قاضی سلطان سے تحریک انصاف کے شاہ محمودقریشی 92ووٹوں کیساتھ پہلے نمبر پر ہیں،،پیپلزپارٹی کے نواب یوسف تالپور 65ووٹوں کیساتھ دوسرے نمبر پر ہیں،،مسلم لیگ ن کی نیلم کماری 23 ووٹوں کیساتھ تیسرے نمبر پر ہیں۔ 

این اے35 کی یونین کونسل نمبر 15کا غیر حتمی غیر سرکاری نتیجہ،  ایم ایم اے کے اکرم درانی 1344ووٹ لے کر آگے،  پی ٹی آئی کے عمران خان کے 351 ووٹ ہیں۔

پی پی 49 کے 29 پولنگ اسٹیشنز  میں مسلم لیگ ن کے بلال اکبرخان کے 11945ووٹ حاصل کیے۔ تحریک انصاف کے رفعت جاوید کے 3451 ووٹ حاصل کر کے دوسرے نمبر پر ہیں۔ 

این اے 147 کے 30 پولنگ اسٹیشنز میں تحریک انصاف کے نوریزشکور کے 7936ووٹ جبکہ مسلم لیگ ن کے عمران احمد شاہ کے 7054 ووٹ ہیں۔

این اے 267 کے 31 پولنگ اسٹیشنز کے غیر حتمی نتائج کے مطابق  بی این پی کے منظور بلچ کے 4784ووٹ، بی اے پی کے نور بنگلزئی کے 3258 ووٹ حاصل کیے۔

این اے 71 کے 38 پولنگ اسٹیشنز کے غیر حتمی نتائج کے مطابق  پی ٹی آئی کے محمد الیاس کے 12126 ووٹ، ن لیگ کے عابد رضا کے 7886 ووٹ ہیں۔

این اے 77 کے 34 پولنگ اسٹیشنز کے غیر حتمی نتائج آگئے۔ ن لیگ کی مہناز اکبر کے 12910 ووٹ، آزاد امیدوار طارق انیس کے 4889 ووٹ لے کر پیچھے ہیں۔ 

این اے 156 کے 35پولنگ اسٹیشنز کے غیر حتمی نتائج کے مطابق  پی ٹی آئی کے شاہ محمود قریشی کے 11296 ووٹ، ن لیگ کے عامر سعید انصاری کے 8479 ووٹ حاصل کرلیے۔ 

این اے 79 کے 85 پولنگ اسٹیشنز میں تحریک انصاف کے محمد احمد چٹھہ کے 30260 ووٹ لے کر پہلے نمبر پر  جبکہ مسلم لیگ ن کے ڈاکٹرنثار چیمہ کے 27332 ووٹ لے کر دوسرے نمبر پر ہیں۔

این اے 80 کے 90 پولنگ اسٹیشنز میں تحریک انصاف آگے جبکہ ن لیگ پیچھےہے۔تحریک انصاف کے میاں طارق محمود کے 28840 ووٹ ، 
ن لیگ کے محمود بشیر ورک کے 25774 کے ووٹ ہیں۔

لودھراں کے حلقہ این اے 161 کے 27پولنگ اسٹیشنز کے غیر حتمی غیر سرکاری نتائج کے مطابق ن لیگ کے صدیق بلوچ 9370 ووٹوں کے ساتھ آگے  ہیں جبکہ پی ٹی آئی کے میاں شفیق 6420 ووٹ کے ساتھ پیچھے  ہیں۔

این اے 81 کے 100 پولنگ اسٹیشنز کے غیر حتمی نتائج کے مطابق ن لیگ کے خرم دستگیر کے 33550 ووٹ، پی ٹی آئی کے صدیق مہر 22410 ووٹ پیچھے ہیں۔ 

این اے 82 کے90 پولنگ اسٹیشنز سے ن لیگ آگے،تحریک انصاف پیچھے ہے۔ ن لیگ کے بیرسٹرعثمان ابراہیم کے 30325 ووٹ جبکہ تحریک انصاف کے علی اشرف مغل کے 26390 ووٹ ہیں۔

این اے 63کے 10 پولنگ اسٹیشنز کے غیر حتمی نتائج کے مطابق  پی ٹی آئی کے غلام سرور خان کے 3505 ووٹ، آزاد امیدوار چودھری نثار کے 1785 ووٹ کے ساتھ پیچھے ہیں۔ 

این اے 83 کے 90 پولنگ اسٹیشنز میں تحریک انصاف آگے،ن لیگ پیچھےہیں۔ تحریک انصاف کے رانا نذیر احمد خان کے 31788 ووٹ جبکہ مسلم لیگ ن کے ذوالفقار بھنڈر کے 30510 ووٹ ہیں۔ 

این اے 123 کے 70 پولنگ اسٹیشنز کے غیر حتمی نتائج کے مطابق  پی ٹی آئی کے مہر واجد کے 16042ووٹ جبکہ  ن لیگ کے ملک ریاض کے 15164 ووٹ لے کر پیچھے ہیں۔ 

این اے 62 کے 20 پولنگ اسٹیشنز کے غیر حتمی نتائج کے مطابق  عوامی مسلم لیگ کے شیخ رشید کے 7710 ووٹ جبکہ ن لیگ کے دانیال چودھری کے 4920 ووٹ ہیں۔

رحیم یار خان کے حلقے این اے 177 میں 14 پولنگ اسٹیشنز کا غیر حتمی غیر سرکاری نتیجہ موصول ،  پاکستان تحریک انصاف کے امیدوار مخدوم خسرو بختیار 7480 ووٹ لیکر آگے جبکہ  پیپلز پارٹی کے مخدوم شہاب الدین 3665 ووٹ لیکر دوسرے نمبر پر ہیں۔

این اے 70 کے 50 پولنگ اسٹیشنز  میں تحریک انصاف کے فیض الحسن شاہ کے 15171 ووٹ لے کر آگے جبکہ مسلم لیگ ن کے جعفر اقبال کے 7413 ووٹ دوسرے نمبر پر ہیں۔ پاکستان پیپلزپارٹی کے قمر زمان کائرہ کے 5110 ووٹ لے کر تیسرے نمبر پر ہیں۔ 

پی پی 33 کے19 پولنگ اسٹیشنز کے غیر حتمی نتائج سامنے آگئے۔  پی ٹی آئی کے لیاقت بدر کے 7064 ووٹ، ن لیگ کے شبیر کوٹلہ کے 3990 ووٹ، پیپلزپارٹی کے تنویر کائرہ کے 784 ووٹ ہیں۔ 

این اے 68 کے 50 پولنگ اسٹیشنز کے غیر حتمی نتائج آگئے۔  ق لیگ کے حسین الہٰی کے 15676 ووٹ، ن لیگ کے امیداوار کے5640 ووٹ لے کر پیچھے ہیں۔ 

این اے 55 اٹک کے پولنگ اسٹیشن نمبر 30 کا غیر حتمی غیر سرکاری نتیجہ منظر عام پر آگیا ۔  تحریک انصاف کے میجر طاہر صادق کے 406 ووٹ، مسلم لیگ ن کے شیخ آفتاب کے 240 ووٹ حاصل کیے ہیں۔ 

این اے 53 اسلام آباد پولنگ اسٹیشن نمبر 224 بوتھ نمبر ایک تا 112 کا غیر حتمی غیر سرکاری نتیجہ،  مسلم لیگ ن کے شاہد خاقان عباسی کے 48 ووٹ،  تحریک انصاف عمران خان کے 36ووٹ، پیپلزپارٹی کے امیدوار سبط الحسن کو 12 ووٹ ملے۔ 

کراچی کے حلقے این اے 249 پولنگ اسٹیشن نمبر 13  سے مسلم لیگ ن کے شہباز شریف 817 ووٹ لے کر آگے  جبکہ پی ٹی آئی کے فیصل واوڈا 345 ووٹ لے کر دوسرے نمبر پر  ہیں۔ 

کراچی میں قومی اسمبلی کے حلقہ این اے243 کے پولنگ اسٹیشن نمبر41 سے تحریک انصاف کے عمران خان 278ووٹو کیساتھ پہلے نمبر پرہیں۔ ایم کیو ایم کے علی رضا عابدی 180ووٹوں کیساتھ دوسرے نمبر پر ہیں۔ ایم ایم اے کے اسامہ رضی 150ووٹوں کیساتھ تیسرے نمبر پر ہیں۔ پیپلزپارٹی کی شہلا رضا 45ووٹوں کیساتھ چوتھے نمبر پر ہیں۔

تونسہ شریف سے حلقہ این اے 189 کے 37پولنگ اسٹیشنز کے غیرحتمی نتائج کے مطابق تحریک انصاف کے خواجہ شیراز 9887 ووٹوں کیساتھ آگے ہیں جبکہ آزاد امیدوار سردارمیر بادشاہ قیصرانی 3693 ووٹوں کیساتھ پیچھے ہیں۔

نارووال میں این اے 78 سے تحریک انصاف کے ابرارالحق کو برتری حاصل ہے. ٹوئنٹی فورنیوز کو تین پولنگ اسٹیشنز کے رزلٹ موصول ہوئے ہیں. ابرارالحق 1094ووٹوں کے ساتھ آگے ہیں. ن لیگ کے احسن اقبال 857 ووٹوں کے ساتھ دوسرے نمبر پر ہیں. تحریک لبیک کے راشد محمود خان نے 231 ووٹ لیے ہیں۔ 

این اے35 کی یونین کونسل نمبر 15کا غیر حتمی غیر سرکاری نتیجہ کے مطابق  ایم ایم اے کے اکرم درانی 1344ووٹ لے کر آگے، پی ٹی آئی کے عمران خان کے 351 ووٹ ہیں۔ 

این اے 206 پولنگ اسٹیشن نمبر105 کا نتیجہ بھی موصول ،  پیپلزپارٹی کے امیدوار خورشید شاہ 500 ووٹ لے کر آگے ہیں۔ تحریک انصاف کے امیدوار طاہر شاہ ووٹ 40 ووٹ لے کر پیچھے ہیں ۔

راولپنڈی کے صوبائی اسمبلی کے حلقہ پی پی 11 کے پولنگ اسٹیشن نمبر 56 سے پی ٹی آئی کے امیدوار چوہدری عدنان 259 ووٹ لے کر پہلے نمبر پرہیں، ن لیگی امیدوار راجہ ارشد 138 ووٹوں کیساتھ دوسرے نمبر پر ہیں۔

بدین میں این اے 230 کے پولنگ اسٹیشن نمبر 23 کا غیر حتمی غیر سرکاری نتیجہ 24نیوز نے حاصل کرلیا۔  پی پی کے امیدوار رسول بخش چانڈیو 266 ووٹ لیکر آگے جبکہ جی ڈی اے کی امیدوار ڈاکٹر فہمیدا مرزا نے 261 ووٹ لیکر دوسرے نمبر پر ہیں۔ 

سیالکوٹ کے حلقہ این اے 73 کے 15پولنگ اسٹیشنز کے غیرحتمی نتائج کے مطابق تحریک انصاف کے عثمان ڈار2610 ووٹوں کیساتھ آگے ہیں جبکہ مسلم لیگ ن کے خواجہ آصف 2530 ووٹوں کیساتھ دوسرے نمبر پر ہیں۔

این اے 156 ملتان کے پولنگ اسٹیشن 146 سے شاہ محمود قریشی 398 ووٹوں کیساتھ پہلے نمبر پر ہیں۔ جبکہ ن لیگ کے عامر سعید انصاری147ووٹوں کیساتھ دوسرے نمبر پر ہیں۔

کراچی کے حلقہ این اے 243، پولنگ اسٹیشن نمبر 43 کا غیر سرکاری غیر حتمی نتیجہ موصول ہوا ہے، متحدہ قومی موومنٹ کے علی رضا عابدی 416 ووٹوں کے ساتھ سرفہرست رہے۔ عمران خان 250 ووٹوں کے ساتھ تیسرے نمبر ہیں۔ پیپلز پارٹی کی شہلا رضا 300 ووٹوں کے ساتھ دوسرے نمبر پر رہیں۔

کراچی کے حلقہ این اے 256، پولنگ اسٹیشن 124 میں غیر حتمی، غیر سرکاری نتیجہ کے مطابق پولنگ اسٹیشن ایم کیو ایم 300 ووٹ لے کر آگے رہی، ایم ایم اے کو 120 ووٹ ملے، تحریک انصاف کو 65 ووٹ پڑے، جب کہ پی ایس پی صرف 32 ووٹ حاصل کرسکی۔

این اے 265کے 59 پولنگ اسٹیشنز پر متحدہ مجلس عمل کے حافظ حمد اللہ کے 11568ووٹ جبکہ پشتونخوا ملی عوامی پارٹی کے محمود خان اچکزئی کے 7926 ووٹ ہیں۔

 قومی اسمبلی کے حلقہ این اے 62 سے شیخ رشید کو سبقت حاصل ہے۔ گورنمنٹ اسکول پھگواڑی کے پولنگ اسٹیشن سے شیخ رشید 308ووٹ لے کر آگے ہیں۔ ن لیگ کے دانیال عزیز 202 ووٹوں کے ساتھ دوسرے نمبر پر ہیں۔

یہ خبر بھی پڑھیں: الیکشن 2018، کیلئے پولنگ کا وقت ختم 

آج قومی اسمبلی کے 272 میں سے 270 حلقوں جب کہ صوبائی اسمبلیوں کے 577 میں سے 570 حلقوں میں الیکشن ہو رہا ہے،جہاں 10 کروڑ 59 لاکھ 55 ہزار 409 ووٹرز حق رائے دہی استعمال کرنا تھا۔ قومی اور صوبائی اسمبلیوں کے 8 حلقوں پر انتخابات ملتوی کیے گئے ہیں، جہاں الیکشن اب بعد میں ہوں گے۔

جن حلقوں میں آج انتخابات نہیں ہو رہے، ان میں قومی اسمبلی کے دو حلقے این اے 60 راولپنڈی اور این اے 103 فیصل آباد جبکہ صوبائی اسمبلیوں کے حلقے پی کے 78 پشاور، پی کے 99 ڈیرہ اسماعیل خان، پی پی 87 میانوالی، پی پی 103 فیصل اباد، پی ایس 87 ملیر اور پی بی 35 مستونگ شامل ہیں۔
اس کے علاوہ سندھ اسمبلی کے حلقے پی ایس 6 کشمور سے میر شبیر بجارانی الیکشن سے قبل ہی بلامقابلہ منتخب ہوچکے ہیں۔نادرا نے ساڑھے 6 لاکھ شناختی کارڈز جاری کردیے-

 ا

وقار نیازی

سٹاف ممبر، یونیورسٹی آف لاہور سے جرنلزم میں گریجوایٹ، صحافی اور لکھاری ہیں۔۔۔۔