کم عمری کی شادیاں رجسٹرڈ کرنے والوں کیخلاف بڑا فیصلہ

کم عمری کی شادیاں رجسٹرڈ کرنے والوں کیخلاف بڑا فیصلہ


(24 نیوز) اسلام آبادہائیکورٹ کاکم عمری کی شادیاں رجسٹرڈ کرنے والوں کےخلاف بڑا فیصلہ آگیا،  کم عمری کی شادی رجسٹرڈ کرنا قانوناً جرم ہے، نکاح خواں کے خلاف کارروائی کرے۔

اسلام آباد ہائی کورٹ نے کم عمر شادیاں رجسٹرد کرنے والے نکاح خوانوں کے خلاف فیصلہ سناتے ہوئے کہا ہے کہ ایسا کرنے والے نکاح خوانوں کے لائسنس معطل کیے جائیں اور ان کے خلاف پولیس کارروائی کی جائے۔ جسٹس محسن اختر نے کم عمری میں شادی کیس کا فیصلہ سنا یا۔

فیصلے میں کہا کہ کم عمری کی شادی رجسٹرڈ کرنا قانوناً جرم ہے، لڑکی اغوام کے مقدمے میں شادی کا عنصرسامنے آئے تو پولیس لڑکی کی عمر کا تعین کرے۔ جسٹس محسن اختر کیانی نے ریمارکس دیتے ہوئے کہا کہ اسلام آباد میں 3نکاح خواں سب کو ملے ہوئے ہی ، مختلف مقدمات میں بھی ان 3نکاح خوانوں کا ہی نام آتا ہے، ایک نکاح خواں کے خلاف 28پرچے ہیں۔

اسلام آباد ہائی کورٹ نے فیصلے کی کاپی آئی جی اور چیف کمشنر اسلام آباد کو بھجوانے کا حکم دیتے ہوئے کہا کہ آئی جی اور چیف کمشنر اسلام آباد فیصلے پر عمل درآمد کرائیں۔

Malik Sultan Awan

Content Writer