لاہور شیخ زاید ہسپتال کے ڈاکٹرز غنڈے بن گئے

لاہور شیخ زاید ہسپتال کے ڈاکٹرز غنڈے بن گئے


لاہور (24 نیوز) شیخ زید ہسپتال میں ینگ ڈاکٹرز نے لیبارٹری ٹیکنیشن کو مبینہ طور پر تشدد کا نشانہ بنا ڈالا،  ہسپتال انتظامیہ نے ذمہ داروں کے خلاف کارروائی کیلئے انکوائری کمیٹی قائم کر دی۔

 24 نیوز ذرائع کے مطابق شیخ زید ہسپتال میں جمعرات کے روز پیڈز وارڈ کے ڈاکٹر احمد کی عمران نامی لیبارٹری ٹیکنیشن سے سی ٹی سکین ٹیسٹ کرانے پر تلخ کلامی ہوئی۔ جس پر ڈاکٹر احمد نے عمران کو سنگین نتائج کی دھمکیاں دیں اور جمعرات کی صبح ایک درجن سے زائد ینگ ڈاکٹرز کے ہمراہ عمران پر ہلہ بول دیا، عمران کو مبینہ طور پر پستول کے بٹ مارا جس سے اس کا سر پھٹ گیا اور شدید چوٹیں آنے پر ڈاکٹرز اسے چھوڑ کر موقع سے فرار ہوگئے۔

 یہ خبر بھی پڑھیں: عمران خان نے خیبر پختونخوا کا بیٹرا غرق کردیا: وزیراعلیٰ پنجاب

 ذرائع کا کہنا ہے کہ عمران کو زخمی حالت میں ایمرجنسی میں داخل کیا گیا۔ واقعہ کاعلم ہونے پرپیرامیڈیکس کی بڑی تعداد ایمرجنسی میں جمع ہوگئی اور ینگ ڈاکٹرز اور عملے کے مابین کشیدگی بڑھ گئی۔ ہسپتال انتظامیہ نے ذمہ داروں کے خلاف کارروائی کیلئے سینئر پروفیسرز اور انتظامی ڈاکٹرز پر مشتمل انکوائری کمیٹی قائم کر دی۔ پیرامیڈیکس نے واقعہ میں ملوث ینگ ڈاکٹرز کے خلاف سخت کارروائی کا مطالبہ کردیا۔