سابق صدر پرویز مشرف کا پاکستان واپس آنے کا اعلان

سابق صدر پرویز مشرف کا پاکستان واپس آنے کا اعلان
24 News HD - Pervez Musharraf


لندن (24 نیوز):آل پاکستان مسلم لیگ کے سربراہ سابق صدر پرویز مشرف نے کہا کہ پانامہ لیکس پر درست عدالتی فیصلہ آیا تھا، نا اہل شخص کو پارٹی سربراہ بنانا پاکستان کے آئین کے ساتھ ظلم ہے۔

تفصیلات کے مطابق پاکستان مسلم لیگ کے سربراہ سابق صدر پرویز مشرف نے ایسٹ لندن میں خطاب کرتے ہوئے جلد ہی پاکستان واپس آنے کا اعلان کر دیا۔پرویز مشرف نے نواز شریف کو نا اہلیت کے بعد پارٹی سرابرہی کے لیے چنے جانے کو خوب تنقید کا نشانہ بنایا، انہوں نے کہا کہ نا اہل شخص کو پارٹی سربراہ بنانا پاکستان کے آئین کے ساتھ ظلم ہے۔ سپریم کورٹ میں اس کے خلاف ریفرنس دائر ہوچکا، اگر عدالت نے آئینی ترمیم کے خلاف فیصلہ دیا تو تصادم کا خطرہ ہے۔

 پرویز مشرف نے کہا کہ اُمید ہے کہ عدالتوں کے فیصلے تاریخ بنائیں گے، پانامہ لیکس پر درست عدالتی فیصلہ آیا تھا، پانامہ لیکس انفرادی خاندان کا تھا، حکومت اور وزیروں کو دن رات دفاع کے لئے لگایا ہوا ہے۔

 انہوں نے کہا کہ میرا پی ایس بی اور ایم کیو ایم کے لیڈروں سے کوئی تعلق نہیں۔ میں مہاجر قوم کی حمایت کا حامی ہوں۔ مہاجر کارڈ کبھی استعمال نہیں کیا نہ اس پر یقین رکھتا ہوں۔

سابق صدر پرویز مشرف نے بلوچستان میں خراب امن و امان کی صورت حال کا ذمہ دار بیرون ملک میں مقیم چند شرپسندوں کو قراردے دیا۔