سشما سوراج کے بعد ایک اور اہم بھارتی شخصیت کا کرتار پور تقریب میں شرکت سے انکار


24نیوز :پاکستانی حکومت کی جانب سے فیصلہ کیا گیا ہے کہ وہ 28 نومبر کو کرتار پور بارڈر کھولے گا اور اس حوالے سے ایک پرشکوہ تقریب کا اہتمام کیا جائے گا جس میں دونوں ممالک کے اعلیٰ اور حکومتی حکام شرکت کریں گے۔

وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے بھارتی ہم منصب سشما سوراج کو اس تقریب میں شرکت کی دعوت دی تھی، اس حوالے سے انہوں نے ٹوئیٹ کی ، انہوں نے بھارتی وزیر خارجہ شسما سوراج، وزیر اعلیٰ بھارتی پنجاب کیپٹن امریندر سنگھ اور نوجوت سنگھ سدھو کو باقاعدہ دعوت دی ہے کہ وہ کرتار پور بارڈر کھولنے کی افتتاحی تقریب میں شرکت کریں۔

دوسری جانب بھارتی وزیراعلیٰ پنجاب ارمندر سنگھ نے محبت کا جواب محبت سے دینے کی بجائے بھارتی فوجیوں کی اموات اور دہشتگردانہ واقعات کو بنیاد بنا کر پاکستان آنے سے انکار کر دیا ہے -

انکا کہنا تھا کہ گردوارا کرتار پورمیں حاضری دینا ہمیشہ سے میرا خواب رہا اور مجھے شاہ محمود قریشی کی جانب سے بھیجا گیا دعوت نامہ ٹھکرانے پر افسوس ہورہا ہے،پنجاب میں بھارتی فوجیوں کی اموات اور دہشتگردانہ کاروائیوں کے ہوتے ہوئے پاکستان نہیں جاسکتا،گورو جی ہمیں امن عطا کریں۔

p>

یاد رہے کہ اس سے پہلے بھارتی وزیر خارجہ بھی پاکستان آنے سے معزرت کر چکی ہیں،بھارتی وزیر خارجہ شسما سووراج نے بھی اس حوالے سے ٹوئیٹ کیا،انکا کہنا تھا کہ 28 نومبر کو کرتار پور کوریڈور کی افتتاحی تقریب میں مدعو کئیے جانے پر پاکستانی وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی کی بے حد مشکور ہوں۔

واضح رہے وزیر اعظم عمران خان کی حلف بردادری تقریب کے موقع پر آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ نے سابق بھارتی کرکٹر نوجوت سنگھ سدھو سے کرتار پور بارڈر کھولنے کا وعدہ کیا تھا جسے اب عملی شکل دی جارہی ہے۔