بانی ایم کیو ایم عمران فاروق قتل کیس کے مرکزی ملزم قرار


کراچی( 24نیوز ) الطاف حسین کو ڈاکٹر عمران فاروق قتل کیس میں مرکزی ملزم قرار دے دیا گیا، قتل کی سازش کے تمام تانے بانے الطاف حسین سے ملتے ہیں، بانی ایم کیو ایم کے خلاف تیار کیا گیا چالان جلد عدالت میں پیش کیا جائے گا۔
تفصیلات کے مطابق برطانیہ میں قتل ہونے والے ایم کیو ایم کے رہنما ڈاکٹر عمران فاروق کیس کا چالان ایف آئی سے کاونٹر ٹیررزم نے تیار کرلیا ہے۔ ذرائع کے مطابق چالان میں ایم کیو ایم کے قائد الطاف حسین کو قتل سازش کا مرکزی ملزم اور ماسٹر مائنڈ قرار دیا گیا ہے۔
ایف آئی اے کے تفتئش کاروں نےچالان میں بتایا ہے کہ ڈاکٹر عمران فاروق کا قتل الطاف حسین کی خواہش اور ہدایت پر کیا گیاکیونکہ الطاص حسین انہیں اپنے لئے ایک بڑا خطرہ سمجھتے تھے۔۔۔ جس کے ثبوت بھی چالان میں شامل کے گئے ہیں۔
چالان میں بتایا گیا ہے کہ ڈاکٹر عمران فاروق قتل کی سازش پاکستان اور لندن میں مشترکہ تیار ہوئی۔۔ برطانیہ سے ملزم محمد انور اور افتخار حسین نے معاونت کی جبکہ پاکستان سے ملزم معظم اور خالد شمیم معاون کاروں میم شامل رہے ملزم کاشف خان اور سید محسن کءبطور اجرتی قاتل خدمات لی گئیں اور انہیں سٹوڈنٹ ویزے پر لندن بھجوایا گیا۔

یہ بھی پڑھیں:عباسی حکومت کیخلاف بڑا فیصلہ محفوظ
چالان میں ملزموں کے بنک ریکارڈ۔ ویزے۔ گرفتار ملزمان اقبال جرم اور دفعہ 164 کا بیان۔ ایف آئی آر کی کاپی جبکہ دیگر دستاویزی ثبوت شامل کئے گئے ہیں۔ تیار کیا گیا چالان 2 مئی کو انسداد دہشت گردی کی خصوصی عدالت میں پئش کئے جانے کا امکان ہے۔

اظہر تھراج

صحافی اور کالم نگار ہیں،مختلف اخبارات ،ٹی وی چینلز میں کام کا وسیع تجربہ رکھتے ہیں