زلفی بخاری کیخلاف درخواست مسترد،کام کرنے کی اجازت مل گئی



لاہور( 24نیوز ) سپریم کورٹ نے وزیر اعظم کے معاون خصوصی زلفی بخاری کو کام کرنے کی اجازت دے دی،اہلیت کیخلاف درخواست مسترد کردی ہے۔ سپریم کورٹ میں وزیراعظم کے معاون خصوصی زلفی بخاری کی دوہری شہریت کیس کی سماعت کی گئی،چیف جسٹس آف پاکستان جسٹس میاں ثاقب نثار کی سربراہی میں بینچ نے سماعت کی۔

کون ہے، کہاں سے آیا ہے؟ یہ زلفی بخاری

سماعت کے دوران چیف جسٹس نے استفسار کیا کہ کون ہے زلفی بخاری ؟ اسکی کیا اہلیت ہے؟کہاں سے آیا ہے یہ؟ اچانک تعیناتی کیسے کر دی گئی، نئے پاکستان میں تو جید لوگوں کو لگانا چاہئے تھا، ذاتی پسند نہ پسند کی بنیاد پر تعیناتی کا عدالت جائزہ لے گی۔

وزیر اعظم کے معاون خصوصی کے وکیل بیرسٹر اعتزاز احسن نے جواب دیا کہ معاون خصوصی وہ لگ سکتا ہے جسے وزیراعظم کا اعتماد حاصل ہو،معاون خصوصی کی اہلیت پر تو سوال بھی نہیں کیا جا سکتا۔

چیف جسٹس نے ریمارکس دیے کہ آپ عدالت کے دائرہ اختیار کو چیلنج کر رہے ہیں، ابھی بتاتے ہیں کہ عدالتی دائرہ اختیار کیاہے۔

درخواست گزار کے مطابق زلفی بخاری غیر قانونی طور پروزیر کے طور پر کام کر رہے ہیں، زلفی بخاری دوہری شہریت کے باعث اس عہدے کے اہل نہیں۔

وکیل زلفی بخاری اعتزاز احسن نے کہا کہ زلفی بخاری کی وجہ سے برٹش ائیرویز پاکستان آئی۔چیف جسٹس نے پھر ریمارکس دیے کہ برٹش ائیرویز کو لانے سے بہتر تھاکہ پی آئی اے کو فعال کرتے،مزید سماعت عدالتی وقفے کے بعد تک ملتوی کردی۔

اظہر تھراج

Senior Content Writer