کراچی: کچے مکانوں کے باسیوں پر خطرات کے سائے منڈلانے لگے


کراچی (24نیوز) 300 سے زائد مخدوش قرار دی گئی عمارتیں کسی بھی وقت بڑے حادثے کا سبب بن سکتی ہیں۔ جن کے مکین عمارتیں خالی کرنے کو تیار نہیں۔ مکینوں کا کہنا ہےکہ انہیں کوئی محفوظ متبادل جگہ فراہم کر دی جائے گی تو وہ عمارتیں خالی کر دیں گے۔

تفصیلات کے مطابق پان منڈی کے قریب رہائشی عمارت کا ایک حصہ  گرا گیا جس سے ایک بار پھر مخدوش عمارتوں کے ڈھ جانے کے خطرات منڈلانے لگے۔ایس بی سی اے کی ٹیکنیکل کمیٹی کی جانب سے 2017 میں سروے کیا گیا جس میں 354 عمارتوں کو مخدوش اور رہائش اختیار کرنے کے لئے خطرناک قرار دیا گیا۔ مکینوں کو ہدایت کی گئی کہ ان عمارتوں کو فوری طور پر خالی کردیا جائے۔تاہم وقت گزرنے کے ساتھ اس حوالے سے کوئی کارروائی ہوتی نظر نہیں آئی۔

واضح رہے کہ کراچی میں زیادہ مخدوش عمارتیں پرانا کراچی یعنی کھارادر، میٹھا در،صدر ، لیاری ، رینچھوڑ لائن اور گرد و نواح میں واقع ہیں۔جہاں بیشتر خانوادے کئی دہائیوں سے آباد ہیں۔ تاہم وقت آگیا ہےکہ برسات کے موسم سے قبل  ان رہائشیوں کو کسی محفوظ جگہوں پر منتقل کیا جائےتاکہ کسی بھی قسم کے جانی نقصانات سے بچا جاسکے۔