گیس چوری سے48 ارب روپے سالانہ نقصان ہو رہا ہے: وزیر پٹرولیم

گیس چوری سے48 ارب روپے سالانہ نقصان ہو رہا ہے: وزیر پٹرولیم


اسلام آباد(24نیوز) وفاقی حکومت اورسوئی ناردرن گیس کمپنی نے چوری کے خلاف مہم شروع کرنے کا اعلان کردیا، وزیر پٹرولیم غلام سرور کہتے ہیں کہ گیس چوری سے48ارب روپے سالانہ کانقصان ہورہاہے۔

وفاقی وزیر پیٹرولیم غلام سرورخان نے کشمیرہاؤس میں مینجنگ ڈائریکٹرعامر طفیل، سینئرجنرل مینجرسہیل گلزار، محمود ضیاء احمد اورایڈیشنل آئی جی پنجاب سعود غنی کے ہمراہ پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ گیس چوری میں مسلسل اضافہ ہوتا جا رہا ہے جس کی وجہ سے وسیع پیمانے پر آپریشن کا فیصلہ کیا گیا ہے، انہوں نے بتایا کہ ملک بھر میں مجموعی طورپرسالانہ 48 ارب روپے کی گیس چوری ہوتی ہے ، ایس این جی پی ایل کے لائن لاسز گیارہ فیصد ہیں، جبکہ اوگرا نے سوئی ناردرن کو سات فیصد تک لائن لاسز کی منظوری دے رکھی ہے ۔

سوئی ناردرن گیس کمپنی کے بوسیدہ سسٹم پر بات کرتے ہوئے وفاقی وزیر نے کہا کہ سسٹم میں لیکجزکو ختم جبکہ زیرزمین بوسیدہ پائپ لائنز کو تبدیل کرنے کی ضرورت ہے،لیکج کی وجہ سے بھی لائن لاسز میں اضافہ ہوتا ہے، گیس چوری ایکٹ موجود ہے تاہم صوبائی حکومتوں نے عملدرآمد کروانا ہے۔

وفاقی وزیر نے کہا کہ گیس کی قیمتوں میں اضافہ 157 ارب خسارے کی وجہ سے کیا گیا ، مہنگی گیس لیکرسستی فروخت کی جا رہی ہے، کمپنیوں کو چلانے کے لئے خسارے سے نکالنا ہے ،143 فیصد گیس کا اضافہ صرف پانچ فیصد لوگوں کو متاثر کرتا ہے ،ٹیرف سلیبز بنانے میں غلطیاں ہوئی ہیں، کمیٹی تشکیل دی گئی ہے ، سفارشات کی روشنی میں عوام کو ریلیف دیا جائے گا۔

سٹاف ممبر، یونیورسٹی آف لاہور سے جرنلزم میں گریجوایٹ، صحافی اور لکھاری ہیں۔۔۔۔