فضائی حدود کی خلاف ورزی،سیاسی جماعتیں میدان میں اتر آئیں

فضائی حدود کی خلاف ورزی،سیاسی جماعتیں میدان میں اتر آئیں


اسلام آباد(24نیوز) بھارت کی جانب سے پاکستانی فضائی حدود کی خلاف ورزی پر ملکی سیاسی جماعتیں بھی میدان میں اتر آئیں، مختلف سیاسی جماعتوں کے رہنماؤں نےبھارتی فضائیہ کےاس بزدلانہ حملے کی شدید مذمت کی۔

ڈاکٹر عارف علوی:  صدرمملکت ڈاکٹر عارف علوی کا انٹرنیشنل کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے  کہناتھاکہ بھارتی میڈیا اشتعال پھیلا رہا ہے، میڈیا کی اشتعال انگیزی خطرے کا باعث ہو سکتی ہے، پاکستان کی مسلح افواج چیلنجز سے نمٹنے کیلئے پرعزم ہے، دہشتگردی پر قابو پانے کے شعبے میں پاکستانی افواج دنیا میں سب آگے ہے،مسلح افواج نے دہشتگردی کے خاتمے کیلئے بے پناہ قربانیاں دیں،کسی بھی تنازعے کو ابھارنے یا حل کرنے میں میڈیا کا اہم کردار ہے،میڈیا کو چاہیے کہ وہ عوام کے سامنے اپنی ساکھ قائم کرے، ہم اپنے ملک کا دفاع کرنا جانتے ہیں۔

شہباز شریف: شہباز شریف نے اپنے بیان میں کہا ہے کہ بھارت نے جنگ شروع کی تو نئی دہلی پر پاکستان کا پرچم لہرائے گا، انشاء اللہ۔ نریندر مودی خاکروبوں کے پاؤں دھونے سے بڑا اور عظیم کام جنوبی ایشیاء کے بےگناہ انسانوں اور غریبوں کو جنگ کی بھٹی میں نہ دھکیل کر کر سکتے ہیں، ایک طرف وہ غریبوں کے پاؤں دھو رہے ہیں تو دوسری طرف بے گناہ نہتے کشمیریوں اور دیگر مسلمانوں کا خون بہا رہے ہیں،بھارتی قیادت ہوش کے ناخن لے اور جنوبی ایشیا کے امن کو اپنے ہاتھوں سے آگ میں نہ دھکیلے۔

پاکستان کی امن پسندی اور تحمل مزاجی کو کمزوری سمجھنا بھارت کی سنگین غلطی ثابت ہوگی،پوری قوم مسلح افواج کے ساتھ مکمل یکجہتی کا اظہار کریں، ہماری مسلح افواج جذبہ شہادت، پیشہ ورانہ مہارت اور بے مثال جرات و بہادری کا پیکر ہیں،ہمیں اپنے بیٹوں، مادر وطن کے سجیلے جوانوں پر ناز ہے، مادر وطن کے تحفظ اور دفاع کی خاطرخون بہانے کے لیے میں محاذ جنگ پر جانے کے لئے تیار ہوں۔

آصف علی زرداری: سابق صدر نے کہا کہ بھارت ہماری پرامن پالیسی کو کمزوری نہ سمجھے،قوم کا ہر فرد افواج پاکستان کے شانہ بشانہ کھڑا ہے،بھارت غلط فہمی میں نہ رہے،ہم بھرپور جواب دینے کی طاقت رکھتے ہیں،مودی انتخابات جیتنےکے لیئے خطہ کا امن خراب نہ کریں،بھارت نے کوئی حرکت کی تو خمیازہ بھگتنے کے لئے تیار رہے۔

پرویز خٹک: بھارتی دراندازی پر وزیر دفاع پرویز خٹک کا کہناتھاکہ بھارت کی طرف سے لائن آف کنٹرول کی خلاف ورزی ناقابل قبول ہے،پاکستانی فوج اور عوام وطن عزیز کے دفاع اور حفاظت کے لئے ہمہ وقت تیار ہیں،دشمن کی بزدلانہ کوششوں کو ہم کبھی کامیاب نہیں ہونے دیں گے۔

چودھری برادران: چودھری شجاعت حسین ،پرویزالہٰی کاکہناتھاکہپاکستان دفاعی صلاحیتوں سے ما لا مال ہے پوری قوم افواج پاکستان کے ساتھ شانہ بشانہ گھڑی ہے،بھارت نے ہمیشہ پاکستان سے دشمنی کی ہے،مودی اپنا الیکشن جیتنے کیلئے اوچھے ہتھکنڈوں پر اُتر آیا ہے ۔ خطے کا امن بھارت نے تباہ کر رکھا ہے،بھارت کے جنگی جنون کو دُنیا کے سامنے بے نقاب کرنے کا وقت آگیا ہے، اس حرکت کے بعد پاکستان جواب دینے کا حق رکھتا ہے ۔

چودھری برادران کاکہناتھاکہقوم کو گھبرانے کی ضرورت نہیں پاکستانی افواج سر حدوں کی حفاظت اور بھر پور جواب دینے کی صلاحیت رکھتی ہے، پاکستان میں دہشت گردی کا سب سے بڑا موجد مودی سرکار ہے، رات کے اندھیرے میں چھپ کر حملہ کرنا بزدلوں کا وطیرہ ہے،امن کا دشمن بھارت سمجھ لے اگر اُس نے حملہ کیا تو پھر بھاگنے نہیں دینگے۔

خواجہ آصف: مسلم لیگ ن کے رہنما خواجہ آصف نے کہا کہ اختلافات بھلانے کا وقت ہے،دنیا کو پیغام دیں کہ پاکستانی قوم متحد ہے،ہمیں بھارت کو باآواز بلند جواب دینا چاہئیے۔

رحمان ملک:  چئیرمین قائمہ کمیٹی برائے داخلہ سینیٹر رحمان ملک کاکہناتھاکہ کابھارتی ائیرفورس کا لائن آف کنٹرول کی خلاف ورزی مودی کی جنگی جنون کو ثابت کرتی ہے،مودی خطےکے امن و امان کو برباد کرنے پر تلے ہوئے ہے۔

سراج الحق: بھارت کی کارروائی سے پیغام ملتا ہے کہ حالات نارمل نہیں،حکومت کو آگے بڑھ کر اقدامات کرنے چاہئیں، ان کاکہنا تھاکہ بی جے پی ہمیشہ پاکستان سے نفرت پر ووٹ حاصل کئے،بھارت میں نچلا طبقہ مودی سرکار کی کارکردگی سے مایوس ہے۔

خورشید شاہ:   پاکستان کے سیاستدان متحد ہیں،کوئی بھول میں نہ رہے کہ سیاسی اختلافات کی وجہ سے پاکستانی سیاسی جماعتیں تقسیم ہیں،بلا تفریق و اختلافات پاکستان کے مسئلے پر پوری قوم ایک ہے، آئندہ بھارت ایسا قدم اٹھائے تو فوری طور عملی جواب دیا جائے ۔

شیری رحمان:  پیپلز بارٹی کی رہنما شیری رحمان کاکہنا تھاکہ بھارت نے جو طبل جنگ بجایا ہے پاکستانی قوم اور افواج اس کیلئے تیار ہے،بھارت کو علم ہونا چاہیے کہ ہماری افواج پوری طرح چوکنا ہیں،بھارت کا پرنٹ میڈیا بھارتی اقدام پر سوال اٹھا رہا ہے،امریکا کو چاہیے بھارت کو باز رہنے کی تلقین کرے،پیغام دیاجائےکوئی پاکستانی جنگ نہیں چاہتا لیکن مسلط کی گئی توہم تیارہیں۔

خرم دستگیر :  سابق وزیر دفاع و وزیر خارجہ خرم دستگیر نے بھارتی حملے پر ردعمل دیتے ہوئے کہا کہ بھارتی جارحیت پوری قوم اور منتخب حکومت کیلیے ایک چینلج ہے، 48 سال بعد بھارت نے پاکستانی حدود کی خلاف ورزی ہے،یہ ایک سنگین مسئلہ ہے۔

مرتضی وہاب:سندھ حکومت کے ترجمان بئریسٹر مرتضی وہاب کا کہنا ہے کے بھارت کتنے بھی ہتھکنڈے استعمال کرے پاک افواج ناکام بنا دے گی پوری قوم پاک افواج کے ساتھ کھڑی ہے۔