شجاع آباد: ظالم زمیندارنےمبینہ طورپر7سالہ ملازمہ پرٹریکٹرچڑھادیا


شجاع آباد(24نیوز) ظالم زمیندارنےمبینہ طورپر7سالہ ملازمہ پرٹریکٹرچڑھادیا، ٹریکٹرکے ویل کےنیچے آکربچی کی ٹانگ ٹوٹ گی،ڈاکٹروں کے مطابق بچی کی ٹانگ کاٹنی پڑے گی ورنہ زہرپھیلنے سے موت واقع ہو سکتی ہے،لاچارباپ نےچھوٹی بیٹی کی جان بچانے کیلئے 13 سالہ بڑی بیٹی کوبا اثرزمیندارجام سعید کے پاس گروی رکھ دیا۔

تفصیلات کے مطابق زمیندار نے 1 ماہ بچی کو کسی ڈاکٹر کو چیک نہ کرایا ٹوٹکوں اور پٹیاں باندھ کر بچی کی ٹانگ ضائع کر دی ڈاکٹروں کے مطابق بچی کی ٹانگ کاٹنی پڑے گی ورنہ زہر پھیلنے سے موت واقع ہو سکتی ہے بچی کومبینہ طور پر جب والد لینے گیا تو زمیندار نے کہا پہلے اپنی 13 سالہ بیٹی میرے پاس چھوڑ جاو اللہ رکھا نے اپنی بیٹی صائمہ زمیندار کے پاس گروی رکھ کر چھوٹی بچی واپس لی۔ 13 سالہ لڑکی 6 روز زمیندار کے قبضہ میں رہی اللہ رکھا کے مطابق وہ بہت غریب آدمی ھے اور جام سعید بڑا زمیندار ھے اسے دھمکیاں دے رہا ہے اور معاملے کو دبانے کیلئے دباو دے رہا ھے کہ اس کے خلاف بہت سے کیس کرا دے گا۔ اللہ رکھا نے حکومت اور چیف جسٹس سے ہاتھ باندھ کر اپیل کی ھے کہ اسے انصاف مہیا کیا جائے اور اس ظالم زمیندار کے جبر سے نجات دلائی جائے۔جبکہ متاثرین اور اہل علاقہ نے ظالم زمیندار جام سعید کے خلاف احتجاج کیا ہے۔

دوسری جانب زمیندار نے اپنا موقف دیتے ہوئے کہا ھے کہ بچی ٹریکٹر کے ہلوں کے نیچے آئی ھے۔ میں اس روز گھر نہیں تھا اور جب میں گھر آیا تو ملازمہ کو سول ہسپتال لے گیا۔ جہاں سے نشتر ہسپتال ملتان گیا مگر پھر اس کا والد خود اسے کسی پرائیویٹ ہسپتال لے گیا۔ میں نے اسے 20 ہزار دینے کی کوشش کی ھے مگر اس نے انکار کر دیا ھے۔ مزید زمیندار نے کہا کہ اگر بچی کے والد نے کاروائی کی تو میں اس کے خلاف بہت سے کیس کرا دوں گا۔