دفاعی بجٹ 19.4فیصد اضافہ کے ساتھ 11سو ارب روپے مختص

دفاعی بجٹ 19.4فیصد اضافہ کے ساتھ 11سو ارب روپے مختص


اسلام آباد (24 نیوز) موجودہ حکومت نے مالی سال 19-2018 میں پیش کیے جانے والے بجٹ میں دفاع کیلئے پچھلےسال کے مقابلے میں اس بار 4۔19 فیصد اضافہ کردیا ہے، اس بار 1100 ارب مختص کیے گئے ہیں۔ موجودہ مالی سال میں 59 کھرب 32 ارب روپے حجم کا بجٹ پیش کیا۔ جس میں 2۔6 جی ڈی پی کا ہدف رکھا گیا ہے۔

 یہ بھی پڑھیں: مالی سال 19-2018 کیلئے59 کھرب 32 ارب روپے کا وفاقی بجٹ پیش

24 نیوز ذرائع کے مطابق وفاقی حکومت نے دفاعی بجٹ میں پچھلے سال کے مقابلے میں 19.4 فیصد اضافہ کیا ہے۔  گذشتہ برس 9 کھرب 20 ارب روپے دفاع کے لیے رکھے گئے تھے، لیکن اس بار 1100 ارب روپے دفاع کے لیے مختض کیے گئے ہیں.

وفاقی وزیر خزانہ مفتاح اسمعیل کا اسمبلی میں خطاب کرتے ہوئے کہنا تھا کہ یکم جولائی 2018 سے فوجی ملازمین اور سول ملازمیں کی تنخواہ میں 10 فیصد ایڈہاک ریلیف الاؤنس بھی دیا جائے گا۔ یاد رہے کہ اس سے قبل بھی ن لیگ کی حکومت نے گزشتہ برس مالی سال 18-2017 کے بجٹ میں دفاع کے لیے مختص رقم میں 7 فیصد اضافہ کیا تھا۔

 پڑھنا مت بھولئے:عمران خان نے بجٹ اجلاس بھی میں آنا گوارا نہ کیا

وفاقی حکومت نے 17-2016 میں دفاع کے لیے 860 ارب مختص کیے تھے۔ جبکہ اگلے سال دفاع کے لیے 920 ارب روپے رکھے گئے تھے۔ اور 18۔2017 میں مجموعی بجٹ 51 کھرپ روپے تھا۔دوسری جانب گزشتہ سال کے دفاع کا مکمل بجٹ خرچ نہیں کیا گیا تھا، 860 ارب میں سے 841 ارب روپے کا بجٹ ہی استعال کیا گیا تھا۔

بجٹ میں فوجی اہلکاروں اور افسران کی خدمات کے اعتراف میں خصوصی الاونس کا بھی اعلان کیا گیا، جبکہ فوجی جوانوں کی تنخواہ میں بھی 10 فیصد کا اضافہ کیا گیا تھا۔