’’شہبازشریف کیلئے پارٹی صدارت تنے رسے پرچلنے سے کم نہیں‘‘

’’شہبازشریف کیلئے پارٹی صدارت تنے رسے پرچلنے سے کم نہیں‘‘


 لاہور(24نیوز) ن لیگ کی صدارت ملنا شہبازشریف کے لئے اعزازتوہےساتھ ہی اس عہدے پرکام کرنا ان کے لئے کسی امتحان سے کم نہ ہوگا۔ وزیراعلیٰ پنجاب کو اپنے بھائی اورقائد نوازشریف کی پالیسی آگے بڑھانے کے ساتھ اداروں کے ساتھ محاذآرائی کا تاثربھی دورکرنا ہوگا۔

شہبازشریف کے لیے پارٹی صدارت کسی تنے ہوئے رسے پرچلنے سے کم نہیں ہوگا۔ ن لیگ کے نئے صدرکو پھونک پھونک کرقدم رکھنا ہوگا۔

ن لیگ کے تاحیات قائد نوازشریف اوران کی صاحبزادی نے اداروں کے خلاف جس طرح کی محاذآرائی شروع کررکھی ہے۔ شہبازشریف پہلے روز سے اس کے حامی نہیں بلکہ وہ ہرادارے سے بناکررکھنے کی شہرت رکھتے ہیں۔

بطورپارٹی صدرشہبازشریف کو ایک طرف اپنے بھائی کو خوش رکھناہے جو صرف اسی صورت ممکن ہے کہ وہ ان کے بیانیے کو آگے بڑھائیں۔

شہبازشریف نے اگریہی لب ولہجہ اپنایا تو اپنے بھائی کوتو وہ خوش کریں گے مگرمقتدراداروں کو ناراض کربیٹھیں گے۔ ایسا ہواتو شہبازشریف کا وزیراعظم بننے کا خواب شاید خواب ہی رہے۔