پی ایس 94 ضمنی انتخاب، ایم کیو ایم نے میدان مار لیا

پی ایس 94 ضمنی انتخاب، ایم کیو ایم نے میدان مار لیا


کراچی(24نیوز)کراچی میں سندھ اسمبلی کےحلقہ پی ایس 94 کےضمنی الیکشن میں ایم کیو ایم کےہاشم رضانے21ہزار537ووٹ لے کر میدان مارلیا،خالد مقبول صدیقی کہتے ہیں یہ کراچی کا فیصلہ ہے جو 2018 کے انتخاب میں رک گیا تھا ۔

عام انتخابات کی طرح ضمنی الیکشن میں بھی پی ایس 94 لانڈھی پر پتنگ کی اونچی اڑان متحدہ کے انتخابی امیدوار ہاشم رضا حریفوں پر بازی لے گئے۔ لانڈھی میں ایم کیوایم کے الیکشن آفس پر پارٹی کارکنان نے فتح کا جشن منایا۔

سربراہ ایم کیو ایم پاکستان ڈاکٹر خالد مقبول صدیقی بھی لانڈھی پہنچے اور کارکنان کو کامیابی پرمبارکباد دی۔ ڈاکٹر خالد مقبول صدیقی بولے کہ مملکت کو شہری علاقوں کے عوام کا فیصلہ تسلیم کرنا چاہیے۔

ضمنی الیکشن کے لئے حلقے میں ایک سو انچاس پولنگ اسٹیشن بنائے گئے تھے جن میں دن بھر بغیر کسی وقفے کے پولنگ کا عمل جاری رہا۔ غیر حتمی وغیر سرکاری نتائج کے مطابق ایم کیو ایم کے امیدوار نے 21 ہزار سے زائد ووٹ لے کر کامیابی حاصل کی۔ پی ٹی آئی امیدوار کو 8ہزار 9 سو ووٹ کے ساتھ دوسرا اور مہاجر قومی موومنٹ کے امیدوار کا تیسرا نمبر رہا۔ صوبائی اسمبلی کی نشست ایم کیوایم کے رکن محمد وجاہت کے انتقال کے باعث خالی ہوئی تھی۔ 

سٹاف ممبر، یونیورسٹی آف لاہور سے جرنلزم میں گریجوایٹ، صحافی اور لکھاری ہیں۔۔۔۔