عام انتخابات میں بڑے بڑے سیاستدانوں کو ہار کا مزہ چکھنا پڑ گیا

عام انتخابات میں بڑے بڑے سیاستدانوں کو ہار کا مزہ چکھنا پڑ گیا


اسلام آباد(24نیوز) انتخابات سے پہلے سیاسی ہوا پر رخ تبدیل کرنے والے پی ٹی آئی میں شامل ہونے والے سیاسی رہنماوں کو حلقے کے عوام نے کوئی خاص اہمیت نہیں دی  اور بڑے بڑے سیاستدانوں کو ہار کا مزہ چکھنا پرا۔ 
عام انتخابات میں عوام نے سارے بڑے لوٹے کوووٹ کی طاقت سے مسترد کر دیا۔ سیاسی جماعتیں تبدیل کرنے والے وہ تمام امیدوار الیکشن میں بری طرح ہار گئے۔فردوس عاشق اعوان نے پیپلزپارٹی کو خدا حافظ کہہ کرپی ٹی آئی میں شمولیت اختیار کی ۔ اسے این اے 72 میں مسلم لیگ ن کے چوہدری ارمغان سبحانی نے 37648ووٹوں سے بدترین شکست دی ۔

یہ بھی پڑھیں: تمام پارٹیوں کی مخصوص نشستوں کے حوالے سے اہم تفصیلات سامنے آگئیں

ندیم افضل چن الیکشن سے پہلے پیپلزپارٹی کو چھوڑ کر پی ٹی آئی میں شامل ہوگئے تھے۔  اسے این اے 88 سرگودھا میں مسلم لیگ نون کے مختار احمد ملک نے13993ووٹوں سے چت کیا۔مسلم لیگ ن کے سابق وزیر اعلی سندھ لیاقت علی جوتی نے این اے 234 سے پی ٹی آئی کی ٹکٹ سے الیکشن میں حصہ لیا۔ اسے پیپلزپارٹی کے عرفان علی لغاری کے ہاتھوں 13308 ووٹوں سے شکست ہوئی۔
مسلم لیگ ن سے پی ٹی آئی میں شامل ہونے والے رضا ہراج کو آزاد امیدوار  سید فخر امام نے 9584 ووٹوں سے شکست دی۔ پیپلزپارٹی سے پی ٹی آئی میں شامل ہونے والے صمام علی بخاری کو این اے 141 میں مسلم لیگ ن کے ندیم عباس نے 32624ووٹوں سے شکست دی۔مسلم لیگ ن سے پی ٹی آئی میں شامل ہونے والے ذوالفقار کھوسہ کو این اے 190 میں آزاد امیدوار امجد فاروق نے 235 ووٹوں سے شکت دی۔

وقار نیازی

سٹاف ممبر، یونیورسٹی آف لاہور سے جرنلزم میں گریجوایٹ، صحافی اور لکھاری ہیں۔۔۔۔