چودھری نثار نے ن لیگ اور تحریک انصاف کو کھلا چیلنج دیدیا


ٹیکسلہ ( 24 نیوز ) سابق وزیرداخلہ   چودھری نثار کا کہنا ہے کہ ایک مرتبہ کہہ دیا کہ آزاد الیکشن لڑنا ہے، میں تھوک کر چاٹنے والوں میں سے نہیں، میاں نواز شریف اس خاندان کا 34 سال تک حجاب رکھا۔

قومی اسمبلی کے حلقہ این اے 63 ٹیکسلہ میں جلسہ عام سے خطاب کرتے ہوئے چودھری نثار کا کہنا تھا کہ مجھے ممبری کا شوق ہوتا تو ن لیگ کو ٹکٹ کے لیے درخواست دے دیتا۔ ٹکٹ کے لیے انٹرویو دینا میری عزت نفس کے خلاف تھا۔ چاہتا تو پی ٹی آئی کا ٹکٹ لے لیتا جس کا اظہار عمران خان نے کئی مرتبہ کیا۔

یہ بھی پڑھیں:شہریوں کے شناختی کارڈز بلاک، بڑی تعداد ووٹ کاسٹ کرنے سے محروم 

چودھری نثار کا کہنا تھا کہ نواز شریف کے اردگرد موجود جوج ماجوج مجھ پر لفظی حملے کرتی ہے۔ اگر اب حملہ ہوا تو جواب ان کو نہیں دوں گا۔ کھلی جنگ ہو گی۔

سابق وفاقی وزیر نے ٹیکسلا میں پی ٹی آئی کے امیدوار غلام سرور خان کو شدید تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ سورج مغرب سے بھی نکل آئے تو غلام سرور خان لوگوں سے وفا نہیں کرے گا۔ اگر غلام سرور خان خود کو لیڈر سمجھتا ہے تو پی ٹی آئی کا ٹکٹ واپس دے اور مجھ سے مقابلہ کرے۔

پڑھنا نہ بھولیں: شاہد خاقان عباسی،خواجہ آصف اور فردوس عاشق اعوان کو خوشخبری مل گئی 

ن لیگ سے ناراض ہونے والے رہنما نے بتایا کہ بڑی حیرت ہوتی ہے جب کہتے ہیں کہ ن لیگ نے کراچی آپریشن کیا۔ کراچی آپریشن میں نے کیا جس میں میرا کلیدی کرداد تھا۔

ان کا کہنا تھا کہ میں اسلام پسند قوتوں کے ساتھ کھڑا ہوں۔ ناموس رسالت میں سوشل میڈیا کے خلاف سب سے طاقتوار آواز میں نے اٹھائی تھی۔ ٹیکسلا میں ن لیگ کو کوئی نہیں جانتا تھا پارٹی کی ایک ایک اینٹ میں نے رکھی۔

ضرور پڑھیں: سیاست کے پرانے بازی گر، سپنوں کی نئی پٹاری لے کرکراچی پہنچ گئے 

34 سال تک ن لیگ سے وفاداری نبھانے والے رہنما نے واضح کہ آج کہتے ہیں کہ ن لیگ کے حقیقی نمائندوں کو ٹکٹ دے رہے ہیں۔ 25 جولائی کو لوگ فیصلہ دیں گے کہ ٹکٹ کا اصل حق دار کون تھا۔ ان کا کہنا تھا کہ میں نے کسی کی خوشامد نہیں کی وفاداری نبھائی ہے۔