تین نوجوانوں نے پاکستانی قوم کا سرفخر سے بلند کردیا

تین نوجوانوں نے پاکستانی قوم کا سرفخر سے بلند کردیا


لندن( 24نیوز ) کامن ویلتھ ممالک سے تعلق رکھنے والے پچاس نوجوان لیڈرز کو ملکہ الزبتھ ایوارڈ سے نوازا گیا جس میں پاکستان کے تین نوجوان لیڈرز مجتبی حسن زیدی ، ماہ نورعلی اور ہارون یسین شامل ہیں جنھیں اس ایوارڈ سے نوازا گیا۔

لندن کے بکنگھم پلس میں منعقد ہونے والی تقریب میں کامن ویلتھ سے تعلق رکھنے والے پچاس نوجوان لیڈرز کو مدعو کرکے کوئینز ینگ لیڈرز ایوارڈ سے نوازا گیا۔ پاکستان سے تعلق رکھنے والے3 نوجوان لیڈرز کو ملکہ الزبیتھ نے خود ایوارڈ سے نوازا۔ لاہور سے تعلق رکھنے والے حسن مجتبی زیدی کو آرٹ کے زریعہ مختلف سکولوں کے بچوں کو یکساں نظام تعلیم دینے پر کام کرنے پر ینگ ایوارڈ سے نوازا گیا۔ حسن مجتبی زیدی کا کہنا تھا کہ وہ بہت خوش نصیب ہیں کے انھیں ملکہ الزبتھ کیجانب سے ینگ لیڈرز ایوارڈ کیلئے منتخب کیا گیا۔

یہ بھی پڑھیں:  ن لیگی امیدوار قمرالاسلام کے بارہ سالہ بیٹا کا انتخابی مہم چلانے کا اعلان

لاہور سے تعلق رکھنے والی ایک اور نوجوان لیڈر ماہ نور علی کا کہنا تھا کہ ینگ لیڈرز ایوارڈ کے زریعے انھیں یوتھ کی نمائندگی کرنے کا موقع ملااور وہ پاکستان میں خواجہ سراوں کے حقوق اور چائیلڈلیبرکیلئے کام کررہی ہیں۔

ہارون یسین کا کہنا تھا کہ انھیں کوئینز لیڈرز ایوارڈ انفرادی طور پر قومی نصاب ایپلی کیشن کے زریعے متوسط طبعقہ سے تعلق رکھنے والےبچوں کو تعلیم فراہم کرنےکی بنیاد پر دیا دیا گیا۔

ملکہ الزبیتھ کیجانب سے پاکستانی نوجوان کو لیڈرز کے طور پر منتخب کرنا اس بات کا ثبوت ہے کہ پاکستان میں بے شمار ٹینلٹ موجود ہے ضرورت اس امر کی ہے کہ حکومت اس ابھرتے ہوئے ٹینلٹ سے استفادہ حاصل کرنے کے ساتھ انھیں آگے بڑھنے کے مواقع بھی فراہم کرے۔