امتحانی مراکز میں بوٹی مافیا کا راج

امتحانی مراکز میں بوٹی مافیا کا راج


کراچی(24نیوز) سندھ میں نویں اور دسویں جماعت کے بورڈ کے امتحانات میں امیدوار کھلے عام نقل کرنے میں مصروف رہے، امتحانی پرچے فوٹی کاپی کے دکانوں سے 50روپے میں ملنے لگے، طالب علم بے خوف ہوکر واٹس ایپ کے ذریعے پرچہ حل کرتے رہے۔

تفصیلات کے مطابق سندھ تعلیمی بورڈ کے زیر اہتمام نویں جماعت کے امتحانات جاری ہیں۔ سال گزشتہ کی طرح اس بار بھی امتحانی مراکز میں قوانین کی دھجیاں بکھیری دی گئیں۔ امتحانی مراکز میں بوٹی مافیا کا راج رہا۔ امتحانی عملہ بوٹی مافیا کے آگے بے بس دکھائی دیا۔

یہ بھی پڑھیں: پنجاب کے سرکاری سکولوں میں بڑے پیمانے پر گھپلوں کا انکشاف         

  دوسری جانب لاڑکانہ میں سندھ نویں جماعت کا سندھی زبان کا پرچہ آؤٹ ہوگیا۔ امیدوار وہاں بھی کھلے عام موبائل فون پر واٹس ایپ کی مدد سے پرچہ حل کرتے رہے۔ گھوٹکی اور ڈہرکی میں نویں جماعت کا انگریزی کاپرچہ آؤٹ ہوگیا۔ سوالیہ پرچہ امتحانی مراکز کے باہر فوٹو کاپی کی دکانوں سے 50روپے میں فروخت ہوتا رہا۔ امتحانی مراکز کے باہر تعینات پولیس اہلکار بھی بوٹی مافیا سے مل گئے۔

یہ بھی ضرور پڑھیں:اساتذہ کی بالآخر سنی گئی, وزیراعلیٰ پنجاب نے خوشخبری سنا دی 

 علاوہ ازیں سکھر کے تعلیمی بورڈ زیر انتظام نویں اور دسویں جماعت کے سالانہ امتحانات جاری ہیں۔ نوشہرو فیروز، گھوٹکی، خیرپور اور سکھر سے 1 لاکھ سے زائد امیدوار امتحانات میں حصہ لے رہے ہیں۔