سروسز ہسپتال میں سٹریچرز پر مریض نہیں اینٹیں اٹھائی جانے لگیں


 لاہور(24نیوز) مال مفت دل بت رحم، سروسز ہسپتال میں مریضوں کی سہولت کے لیے پڑے سٹریچرز کو عملے نے ریڑھی بنا لیا۔ لواحقین نے غیرذمہ داری پر اعلیٰ حکام سے نوٹس لینے کامطالبہ کیا ہے۔

 24 نیوز ذرائع کے مطابق سروسز ہسپتال میں سہولیات دعوؤں تک محدود رہ گئیں۔ ہسپتال کا عملہ سٹریچر سامان لانے، لے جانےکیلئے استعمال کرنےلگا۔ سٹریچر پراینٹیں اور باقی سامان شفٹ کیا جارہا ہے۔ جس کے باعث سٹریچرز خراب ہوجاتے ہیں۔ ریڑھی کا استعمال کرنے کے بجائے سٹریچر کو ریڑھی بنا لیا گیا۔

یہ بھی لازمی پڑھیں:موجودہ حکومت نے پاکستان کے ہر شہری کو کتنا مقروض کر دیا؟ جاننے کیلئے خبر پڑھیں 

  ہسپتالوں میں پہلے ہی مریضوں کیلئے سٹرکچر کی کمی کاسامنا ہے۔ ہسپتال کاعملہ سٹرکچر پرتعمیراتی سامان بھی لے جانے سے گریزنہیں کرتا۔ سروسز ہسپتال میں عملے کی غیرذمہ داری پرکوئی پوچھنے والا نہیں۔ مریضوں اور لواحقین نے غیرذمہ داری پر اعلیٰ حکام سے نوٹس لینے کامطالبہ کیا ہے۔