ماہرین آثار قدیمہ نے 550سال قدیم بچوں کی قربان گاہ دریافت کر لی


 24نیوز: سائنس ترقی کر رہی ہے جس کی بدولت آئے روز کوئی نا کوئی نئی دریافت سامنے آرہی ہے۔ اسی سسلے میں ایک نئی دریافت سامنے آئی ہے جس نے انسانی تاریخ کو چونکا کے رکھ دیا ہے۔

 ماہرینِ آثارِ قدیمہ نے لاطینی امریکہ کے ملک پیرو میں ایک دریافت کی ہے جو ممکنہ طور پر انسانی تاریخ میں بچوں کوقربان کرنے کا سب سے بڑا واقعہ ہو سکتا ہے۔پیرو کے شمالی ساحلی علاقے میں ماہرین نے ایک اجتماعی قبر دریافت کی ہے جس میں اندازوں کے مطابق 550 سال قبل 140 بچوں کی قربانی دے کر انھیں دفن کیا گیا تھا۔

یہ بھی پڑھیں:خوش نصیب جوڑے کے ہاں بیک وقت چار بچوں کی پیدائش
 
یہ دریافت شہر تروہیلو کے قریب کی گئی ہے جو کہ قدیم تہذیب کے وسطیٰ مقام کے قریب ہے۔ یہ نایاب دریافت نیشنل جیوگرافک سوسائٹی کی امداد سے چلنے والے ادارے کے ذریعے کی گئی ہے۔نیشنل جیوگرافک کی جانب سے اعلان کردہ اعداد و شمار کے مطابق قربان کیے گئے یہ 140 بچے 5 اور 14 سال کی عمر کے درمیان تھے تاہم ان میں سے زیادہ کی عمریں 8 سے 12 کے درمیان تھیں۔

پڑھنا نہ بھولیں:چینی شہری نے کمال کردیا
 
بہت سے بچوں کے جسم پر شوخ لال رنگ بھی لگایا گیا تھا اور قوی امکان ہے کہ یہ قربانی کی رسم کا ایک حصہ تھا۔