نئی حکومت نے گیس کی قیمتوں کیلئے سفارش تیار کرلی

نئی حکومت نے گیس کی قیمتوں کیلئے سفارش تیار کرلی


اسلام آباد ( 24نیوز ) پی ٹی آئی حکومت نے گیس کی قیمتوں کی سفارش تیار کرلی، صنعتوں اور فیکٹریوں سمیت گھریلو صارفین کے لیے گیس کی قیمتوں میں اضافے کی تجاویز کل اقتصادی رابطہ کمیٹی کے اجلاس میں پیش کی جائیں گی۔

پی ٹی آئی حکومت نے برسر اقتدار آتے ہی عوام پر مہنگائی کا بم گرانے کی تیاری کرلی ہے۔ گیس صارفین کے لیے گیس کی قیمتوں میں اوسطا 50 فیصد تک اضافے کی سفارش تیار کرلی ہے ذرائع کے مطابق گھریلو صارفین کے لیے گیس کی قیمت میں 200 روپے ایم ایم بی ٹی یو اضافہ کی تجویز پیش کی گئی ہے ماہانہ ایک سو کیوبک میٹر گیس استعمال کرنے والے صارفین کے لیے قیمت 110 روپے بڑھا کر 314 روپے 67 پیسے جب کہ 300 کیوبک میٹر گیس استعمال کرنے والے صارفین کے لیے قیمت 220 روپے سے بڑھا کر 629 روپے 33 پیسے اور 300 کیوبک میٹر سے زائد استعمال کرنےو الے صارفین کے لیے قیمت 600 روپے سے بڑھا کر 780 روپے کرنے کی سفارش کی گئی ہے۔

کمرشل صارفین کے لیے گیس کی قیمت 700 روپے ایم ایم بی ٹو یو سے بڑھا کر 780 روپے 43 پیسے، سی این جی اسٹیشنز کے لیے گیس کی قیمت 700 روپے سے 910 روپے اور سیمینٹ فیکٹریوں کے لیے گیس کی قیمت 750 روپے سے بڑھا کر 975 روپے 54 پیسے کرنے کی سفارش کی گئی ہے۔  پاور جنریشن کمپنیوں کے لیے گیس کی قیمت 780 روپے 43 پیسے، وپڈا اور آئی پی پیز کے لیے گیس کی قیمت 520 روپے جب کہ کیپٹو پاور کے لیے گیس کی قیمت 780 روپے فی ایم ایم بی ٹی یو کرنے کی تجویز دی گئی ہے۔

تندور مالکان کے لیے بھی گیس مہنگی کرنے کی سفارش کی گئی ہے۔ ماہانہ ایک سو کیوبک میٹر گیس استعمال کرنے والے تندور مالکان کے لیے گیس کی قیمت 314 روپے، 300 کیوبک میٹر تک گیس استعمال کرنے والوں کے لیے 629 اور 300 سے زائد گیس استعمال کرنے والے تندور مالکان کے لیے گیس کی قیمت 910 روپے 50 پیسے ایم ایم بی ٹی یو نرخ مقرر کرنے کی سفارش کی گئی ہے۔