نیب ایگزیکٹو بورڈ اجلاس:6ریفرنسز،4انکوائریز،11انوسٹی گیشنزکی منظوری


لاہور (24 نیوز) بڑے بڑے نام قومی احتساب بیورو کے شکنجہ میں آ گئے۔ نیب ایگزیکٹو بورڈ نے 6 ریفرنسز، 4 انکوائریز،11 انوسٹی گیشنز کی منظوری دے دی۔ نوازشریف، شہبازشریف، بابراعوان، آصف ہاشمی، یوسف رضا گیلانی اور راجہ پرویز اشرف کے خلاف بھی ریفرنسز کھلیں گے۔

قومی احتساب بیورو کے ایگزیکٹو بورڈ کا اجلاس ہوا جس میں بڑے بڑے فیصلے کیے گئے۔ جس میں وزیراعلیٰ خیبرپختونخوا کے سابق مشیر سکندر عزیز کے خلاف انوسٹی گیشن کا فیصلہ کیا گیا۔

نیب کی جانب سے شریف برادران کے خلاف ریفرنس رائیونڈ روڈ منصوبہ میں کرپشن پر دائر کیا جائےگا۔ شریف برادران پرقومی خزانہ کو ساڑھے بارہ کروڑ روپے نقصان پہنچانے کا الزام ہے۔ نندی پورپن بجلی منصوبہ میں کرپشن پر بھی ریفرنس دائر کیا جائے گا۔ نندی پور پن بجلی منصوبہ میں قومی خزانے کو 113 ارب روپے کا نقصان پہنچایا گیا۔

اجلاس میں سابق وزیراعظم یوسف رضا گیلانی کے خلاف انوسٹی گیشن کی منظوری دے دی گئی۔ یوسف رضا گیلانی پر غیر قانونی تعیناتیوں اور اختیارت کے ناجائز استعمال کا الزام ہے۔ سابق وزیرڈاکٹر ارباب عالمگیر اور عاصمہ ارباب کے خلاف انوسٹی گیشن کی منظوری دےدی گئی۔ ارباب عالمیگر اور عاصمہ ارباب پر آمدن سے زائد اثاثے بنانے کا الزام ہے۔

سابق سیکرٹری شاہد رفیع، سابق ڈائریکٹر اعجاز بشیر کے خلاف بھی انوسٹی گیشن کی منظوری دی گئی ہے۔ سابق چیئرمین پاکستان تمباکو بورڈ کے خلاف ریفرنس کی منظوری دے گئی ہے۔ ملزم پر اختیارت کے ناجائز استعمال اور قومی خزانے کو کروڑوں روپے کا نقصان پہنچانے کا الزام ہے۔

ایگزیکٹو بورڈ کی جانب سے سابق چیرمین واپڈا طارق حمید اور دیگر کے خلاف بھی مقدمات درج کرنے کا فیصلہ کر لیا گیا۔ حکومتی امداد کی غلط تقسیم کرنے کے الزام میں سابق وزیراعلیٰ بلوچستان نواب اسلم رئیسانی، سابق اراکین اسمبلی غلام ملک حیدر اور سلطان محمود ہنجرا کے خلاف بھی انوسٹی گیشن کی منظوری دے دی گئی۔

علاوہ ازیں سابق سیکرٹری لیبرسندھ نصرحیات کے خلاف بدعنوانی کا ریفرنس دائر کرنے کی منظوری دی گئی ہے۔ وزیراعلیٰ خیبرپختونخوا کے سابق مشیرسکندر عزیزکے خلاف انویسٹی گیشن کا فیصلہ بھی کر لیا گیا۔ سکندر عزیز پر سرکاری اراضی پر قبضہ اور غیرقانونی منتقلی کا الزام ہے۔