مدرسے میں عجائب گھرقائم، صوبائی حکومت کی جانب سے این او سی جاری


پشاور(24نیوز)پاکستان کی تاریخ میں پہلی مرتبہ مدرسے میں اپنی نوعیت کا واحد اور منفرد عجائب گھر قائم کیا گیا،عجائب گھر میں ہزاروں سال پرانے مخطوطات اور ماڈلز رکھےگئے ہیں۔

تفصیلات کے مطابق پشاور شہر سے بیس کلومیٹر کے فاصلے پر واقع مدرسہ جامع عثمانیہ میں پاکستان کی تاریخ کا پہلا اور منفرد عجائب گھر قائم کیا گیا ہے۔ عجائب گھر کو صوبائی حکومت کی جانب سے این او سی بھی دیا گیا ہے۔ جس کا مقصد اسلامی تاریخ کی قابل ذکر اشیاء کو تجرباتی طور پر استعمال کرنا ہے۔

 علاوہ ازیں میوزیم میں رسول کریم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کے زیر استعمال تلوار کا ماڈل، قرآن کریم کے قلمی نسخے، تفاسیر، اکابرین کے تبرکات اور طلباء کی جانب سے پاکستان کی مختلف ثقافتوں کے رنگ اور تاریخی مقامات کے ماڈلز بھی لوگوں کی توجہ کا مرکز ہیں۔

مدرسے کی انتظامیہ کے مطابق اس عجائب گھر میں اگلا قدم قران مجید میں قابل ذکر سائنسی علوم اور مسلمان سائنسدانوں کی ایجادات رکھی جائیں گی۔ جس سے مدرسے کے طلباء میں دینی علوم کے ساتھ دنیاوی تعلیم کا رجحان پیدا ہوگا اورباہر سے آنیوالے لوگ بھی اسلام کی ان شاہکاروں سے استفادہ حاصل  کریں گے۔