کلبھوشن کے اہلخانہ کو پاکستان میں ہراساں کیا گیا:سشما سوراج


نئی دہلی(24نیوز) بھارت اپنی ہٹ دھرمیں سے کسی طور باز نہیں آرہا، کبھی جنگ بندی معاہدے کی خلاف ورزی تو کبھی بے بنیاد الزام تراشی عادت ہی بنا لی ہے تم نے بھارت اپنی، بھارتی وزیر خارجہ کی پاکستان پر الزام تراشی شسما سراج نے کہا کلبھوشن کے اہلخانہ کوپاکستان میں ہراساں کیا گیا۔

تفصیلات کے مطابقمکار مودی سرکار نے کر دی پاکستان پر نئی یلغار، دہشت گرد کلبھوشن کی اہل خانہ سے ملاقات کرانا بھی بنا پاکستان کا جرم، بھارتی وزیر خارجہ نے سزائے موت کی قیدی سے اہل خانہ کی ملاقات کو بھی متنازع بنادیا۔

پہلے بھارتی وزیر سشما سوراج کلبھوشن یادیو کی اہل خانہ سے ملاقات کیلئے خود منت سماجت کرتی رہیں، پاکستان نے جذبہ خیرسگالی کے تحت ملاقات کرا دی، حالانکہ ایسے معاملات پر بھارت خود بھی دوہرا معیار رکھتا ہے۔

سشماسوراج نے پاکستان کے جذبہ خیر سگالی کو تو کیا سراہنا تھا، پاکستان پر ملاقات کے حوالےسے پراپیگنڈا کاالزام عائد کر دیا،کہنے لگیں کلبھوشن کو جو سکھایا اور پڑھایا گیااس نے وہی کیا،یہ بھی کہہ دیا کہ کلبھوشن کے اہل خانہ کو پاکستان والوں نے ہراساں بھی کیا،کلبھوشن کی اہلیہ اور والدہ کے گلے سے منگل سوتر اتروا کر ان کی توہین کی گئی۔

بھارتی وزیر خارجہ سشما سوراج پارلیمنٹ کے ایوان بالا میں خطاب کر رہی تھیں، سشما سوراج نے کہا کہ کلبھوشن نے ملاقات میں والدہ سے پہلا سوال اپنے والد کے بارے میں کیا، کیونکہ اس کی والدہ کے گلے میں منگل سوتر نہیں تھا۔

مزید جاننے کیلئے ویڈیو دیکھیں: