توہین عدالت کیس، نہال ہاشمی کو رہا کردیا گیا


راولپنڈی (24نیوز) مسلم لیگ ن کے رہنما نہال ہاشمی توہین عدالت کیس میں ایک ماہ قید کی سزا مکمل ہونے کے بعد جیل سے رہا ہو گئے۔ لیگی کارکنان کی بڑی تعداد نے ان کا استقبال کیا۔

نہال ہاشمی کو ایک ماہ قید کی سزا مکمل ہونے کے بعد رہا کردیا گیا، جہاں لیگی کارکنان کی بڑی تعداد نے ان کا استقبال کیا انہیں پھولوں کے ہار پہنائے اور شدید نعرے بازی کی ۔اس موقع پر کوئی بھی لیگی رہنما اڈیالہ جیل کے باہر نہیں آئے ۔

جیل سے باہر آکر نہال ہاشمی ںے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ تمہارے ہاتھ میں جیل بھیجنا ہو سکتا ہے ،جان لینا ہو سکتا ہے لیکن عزت اور ذلت میرے رب کے ہاتھ میں ہے۔ سازشیو تمھارے ہاتھ میں کچھ نہیں ہے،میں نے کل جو کہا تھا آج بھی کہ رہا ہوں، نہال ہاشمی نے کب کسی چاچے یا ماے رحمتے کی توہین کی؟ شرمندہ وہ ہو جو چور ہے۔ میرا کل بھی قائد نوازشریف تھا آج بھی ہے،مجھے نواز شریف کے قیادت میں کام کرنے سے اللہ کے سوا کوئی نہیں روک سکتا ۔

واضح رہے کہ نہال ہاشمی کوپاناما کیس کی جے آئی ٹی اور عدلیہ کے ججز کے خلاف دھمکی آمیز بیان دینے پر توہین عدالت میں ایک ماہ سزا سنائی گئی تھی ۔