وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی کو اعتما د میں لیے بغیر بھارتی پائلٹ چھوڑنے پر تیار



 اسلام آباد(24نیوز)قوم کو اعتماد میں لیا اور نہ پارلیمنٹ کو،وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی امریکی صدر ٹرمپ کی  خواہش پر بھارتی پائلٹ کو چھوڑنے پر تیار ، کہا ہے کہ گرفتار بھارتی پائلٹ کی واپسی سے امن ہوتا ہے تو اس پر غور کے لیے تیار ہیں۔

کابینہ اجلاس کے بعد میڈیا سے بات اورنجی ٹی وی چینل کودیئے گئے انٹرویو میں شاہ محمود قریشی نے کہا کہ پاکستان کے امریکا کے ساتھ دیرینہ تعلقات ہیں، ہم صدرڈونلڈ ٹرمپ کے بیان کا خیر مقدم کرتے ہیں، خوشی ہے کہ صدرٹرمپ نے صورتحال کی سنگینی کو بھانپا اورمداخلت کا فیصلہ کیا۔

وزیرخارجہ کا کہنا تھا کہ بھارت طاقت سے مسئلہ کشمیر حل نہیں کرسکا، بھارت خطے میں کشیدگی پیدا کرنے کی کوشش کررہا ہے، پاکستان کی خواہش اور ترجیح امن اوراستحکام ہے، ہم تو پہلے دن سے کہہ رہے ہیں کہ ہم امن وامان کے داعی ہیں۔ پاکستان امن کی خاطر لچک دکھانے کے لیے تیار ہے، پائلٹ کی واپسی سے امن ہوتا ہے تواس پرغورکے لیے تیار ہیں۔ وزیراعظم عمران خان مودی کے ساتھ بات چیت اورامن کی دعوت دینے کے لیے تیارہیں، کیا مودی تیار ہیں؟۔

سعودی وزیر خارجہ جلد پاکستان آرہے ہیں

وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے  پارلیمنٹ آمد کے موقع پر میڈیا سے گفتگو  میں کہا کہ سعودی وزیر خارجہ جلد پاکستان آرہے ہیں، دنیا نے پاکستان کا رویہ دیکھ لیا ہے،  پاکستان چاہتا ہے کہ پاک بھارت ٹینشن ختم ہو،  میری عالمی دنیا کے اہم رہنماؤں سے بھارتی جارحیت کے معاملہ پر بات ہوئی ہے، دنیا سے پاکستان کو مثبت پیغام ملا ہے، روس، چین، برطانیہ، کینیڈا اور یورپی یونین نے یہی کہا ہے کہ خطہ میں امن ہونا چاہیے، باہر کی دنیا نے کہا ہے کہ ہمیں تمام معاملات کو مذاکرات سے حل کرنا چاہیے، زیر حراست بھارتی پائلٹ کا پاکستان میں پوری طرح سے خیال رکھا جارہا ہے،  پاکستان ذمہ دار ملک ہے اور ہماری افواج نہایت پروفیشنل ہیں،  بھارتی پائلٹ کی فیملی کو پیغام بھیجا ہے کہ پریشانی کی کوئی بات نہیں۔

وفاقی کابینہ کے اجلاس میں بڑے فیصلے

ادھر وفاقی کابینہ کے اجلاس میں  گزشتہ روز قوم سے خطاب اور بھارت کو پھر مذاکرات کی پیشکش  پر وزیر اعظم کو خراج تحسین پیش کیا،کابینہ ارکان نے کہا کہ وزیر اعظم نے قوم سے خطاب میں پاکستانی عوام کی بھرپور ترجمانی کی. کابینہ ارکان کابینہ کا کنٹرول لائن کی خلاف وزری پر دو بھارتی طیارے مار گرانے پر پاک فضائیہ کی کارروائی پر بھی اظہار اطمینان کیا، ذرائع کے مطابق  وفاقی کابینہ کا مسلح افواج کی دفاعی صلاحیت پر بھی اعتماد کا اظہار وزیر خارجہ نے شاہ محمود قریشی بھارتی دراندازی، پاک بھارت کشیدگی اور سفارتی کوششوں پر بریفنگ دی،  شاہ محمود قریشی نے او آئی سی اجلاس میں بھارتی وزیر خارجہ کو بلائے جانے کا معاملہ کابینہ میں اٹھایا، ذرائع شاہ محمود نے چین، سعودی عرب، ترکی اور ایران کے وزرائے خارجہ اور اقوام متحدہحکام سے رابطوں بارے آگاہ کیا۔

کابینہ اجلاس میں بھارتی جارحیت سے نمٹنے کی سیاسی، سفارتی و عسکری لائحہ عمل پر بھی غور کیا،وفاقی کابینہ نے قومی سلامتی کمیٹی کے فیصلوں کی توثیق کردی پاکستان حالیہ دنوں بھارتی دراندازی اور جارحیت کو ہر عالمی فورم پر اٹھائے گا ، دنیا کو بھارتی جنگی جنون کے حقائق سے آگاہ کرنے کے لئے سفارتی کوششیں مزید تیز کی جائیں گی، انتخابی معرکہ سر کرنے کی خاطر خطے کو جنگ کےخطرے میں دھکیلنے کے بھارتی پلان سے آگاہ کیا جائے گا۔

واضح رہے کہ بھارت نے پلوامہ واقعہ کی تحقیقات کی پاکستانی پیشکش قبول کرتے ہوئے ڈوزیئرپرمبنی تحقیقاتی تقاضا سفارتی طورپر پاکستان کے حوالے کردیا ہے۔ بھارت نے وزیراعظم عمران خان کی تقریرکے بعد ڈوزیئرنئی دہلی میں پاکستان کے قائم مقام ہائی کمشنر کے حوالے کیا۔

اظہر تھراج

Senior Content Writer