پاکستانی تاریخ کے افسوسناک سانحہ کو 8 برس گزر گئے

پاکستانی تاریخ کے افسوسناک سانحہ کو 8 برس گزر گئے


اسلام آباد( 24نیوز ) ایئر بلو سانحہ کو آٹھ سال مکمل ہو گئے،اس افسوسناک سانحہ میں جاں بحق ہونیوالے افراد کے لواحقین نے اسلام آباد کے مقامی قبرستان میں اپنے پیاروں کیلئے دعا مغفرت کی اور انکی قبروں پر پھول چڑھائے۔

تفصیلات کے مطابق 28 جولائی 2010 میں کراچی سے آنیوالے ایئر بلو کے مسافر طیارے کو اسلام آباد مارگلہ پہاڑوں پر حادثہ پیش آیا۔ پاکستانی تاریخ کے سب سے بڑے افسوسناک حادثے میں طیارے میں موجود تمام 152 افراد ہلاک ہوئے۔ ایئر بلو سانحہ کو 8 سال پورے ہونے پر جاں بحق افراد کے لواحقین نے اسلام آباد کے ایچ الیون قبرستان میں اپنے پیاروں کی قبروں پر دعا مغفرت کی اور پھولوں کے گلدستے بھی چڑھائے۔

یہ بھی لازمی پڑھیں۔۔۔ایف آئی اے سر گرم،دوبڑی سیاسی جماعتوں کے خلاف گھیرا تنگ 

ایئر بلو سانحہ میں ہلاک ہونیوالے افراد کے لواحقین نے ایئر بلو انتظامیہ اور پاکستان سول ایوی ایشن اتھارٹی کی عدم توجہی اور 8 سال گزر جانے کے باوجود حادثے کی تحقیقات نہ ہونے پر شکوہ کیا۔ ایئر بلو سانحہ متاثرین کے لواحقین نے چیف جسٹس آف پاکستان سے اپیل کی کہ سانحے کی تحقیقات کرائی جائیں تاکہ آئندہ اس طرح کے حادثات سے بچا جا سکے۔