سیاست میں خون کے رشتے بھی مدمقابل آگئے

سیاست میں خون کے رشتے بھی مدمقابل آگئے


کراچی ( 24نیوز ) سیاست میں خون کے رشتے بھی مدمقابل آگئے۔ سندھ کے کئی حلقوں سے سکے رشتہ دارایک دوسرے کے خلاف میدان میں اتریں گے۔

عام انتخابات 2018  سندھ میں خون کے رشتوے سیاسی اکھاڑے میں مدمقابل اترگئے، مختلف پارٹیوں سے نامزد کردہ چچا بھتیجے، بھائی، بہن، ماموں بھانجے ایک دوسرے کے مخالف الیکشن لڑیں گے۔این اے دوسوسولہ سانگھڑ سے شازیہ عطا مری کے مدمقابل کوئی اور نہیں بلکہ ان کے چھوٹے بھائی اکبر علی مری میدان میں اترے ہیں۔ شازیہ مری پیپلز پارٹی جبکہ اکبر علی مری آزاد حیثیت سے حصہ لے رہے ہیں۔

یہ بھی پڑھیں:

پی ایس 57 تھرپارکر سے سابق وزیر اعلی سندھ ڈاکٹر ارباب غلام رحیم کے مدمقابل ان کے بھتیجے ارباب لطف اللہ امیدوارہیں۔ ارباب غلام رحیم جی ڈی اے اور ارباب لطف اللہ پیپلز پارٹی کے امیدوار ہیں۔سندھ اسمبلی کا حلقہ پی ایس 48 میرپورخاص پر بھی دلچسپ صورتحال پیدا ہوگئی ہے۔ سابق صوبائی وزیر سید علی نواز شاہ کے بھانجے سید ذوالفقارعلی شاھ مد مقابل ہیں۔ سید علی نواز شاہ آزاد حیثیت سے پیپلز پارٹی کے ٹکٹ پر سید ذوالفقارعلی شاھ کا مقابلہ کریں گے۔

 پڑھنا نہ بھولیں:

دیکھنا یہ ہے ان مقابلوں میں بھائی جیتتا ہے یا بہن، چچا کامیاب ہوتے ہیں یا بھتیجا۔ اور پھر ماموں بھانجے کے مقابلے میں کون بازی لے کر جاتا ہے۔ فیصلہ 25 جولائی کو ہوجائے گا۔

شازیہ بشیر

   Shazia Bashir   Edito